"گرہ کھلنے تک” کے شاعر شہزاد نیر کا انٹرویو

"گرہ کھلنے تک” کے شاعر شہزاد نیر کا انٹرویو

تفکر – آپ کا پورا نام؟

شہزاد نّیر۔۔محمد شہزاد

تفکر – قلمی نام؟

شہزاد نّیر۔۔شہزاد نیر

تفکر – کہاں اور کب پیدا ہوئے؟

شہزاد نّیر۔۔چاراپریل انیس سو تہتر،گوجرانوالہ

تفکر – تعلیمی قابلیت؟

شہزاد نّیر۔۔ایم فل ابلاغ عامہ،جاری

تفکر – ابتدائی تعلیم کہاں سے حاصل کی؟

شہزاد نّیر۔۔گوندلانوالہ،گوجرانوالہ

تفکر – اعلی تعلیم کہاں سے حاصل کی؟

شہزاد نّیر۔۔پنجاب یونیورسٹی،علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی،بلوچستان یونیورسٹی۔

تفکر – پیشہ؟

شہزاد نّیر۔۔آرمی آفیسر

تفکر –ادبی سفر کاآغاز کب ہوا؟

شہزاد نّیر۔۔ساتویں جماعت سے

تفکر – آپ نظم یا غزل میں کس سے متاثر ہوئے؟

شہزاد نّیر۔۔میرو غالب،اقبال و راشد

تفکر -کسی شاعر کا تلمذ اختیار کیا؟

شہزاد نّیر۔۔ماجد الباقری،جان کاشمیری

تفکر – ادب کی کون سی صنف زیادہ پسند ہے؟

شہزاد نّیر۔۔نظم،ناول

تفکر – ادب کی کس صنف میں زیادہ کام کیا؟

شہزاد نّیر۔۔شاعری

تفکر – اب تک کتنی تصانیف شائع ہو چکی ہیں؟

شہزاد نّیر۔۔تین

"برفاب”،”چاک سے اترے وجود”،”گرہ کھلنے تک”

تفکر – اپنے خاندان کے حوالے سے کچھ بتائیں؟

شہزاد نّیر۔۔غیر ادبی سا گھرانہ

تفکر – ازدواجی حیثیت؟

شہزاد نّیر۔۔شادی شدہ

تفکر – فیملی ممبرز کے بارے میں بتائیے؟

شہزاد نّیر۔۔پانچ بچے

تفکر – آج کل کہاں رہائش پذیر ہیں؟

شہزاد نّیر۔۔کوئٹہ تعینات ہوں

تفکر – بچپن کی کوئی خوبصورت یاد؟

شہزاد نّیر۔۔گاؤں کے کھیتوں میں بھاگنا دوڑنا۔

تفکر – ادبی سفر کے دوران میں کوئی خوبصورت واقعہ؟

شہزاد نّیر۔۔متحدہ عرب امارات کے مشاعروں میں شرکت۔

تفکر – ادب میں کن سے متاثر ہیں؟

شہزاد نّیر۔۔مارکیز،تارڑ

تفکر – ادبی رسائل سے وابستگی؟

شہزاد نّیر۔۔فنون،اوراق

تفکر – ادبی گروپ بندیوں اور مخالفت کا سامنا ہوا؟

شہزاد نّیر۔۔نہیں

تفکر – ادب کے حوالے سے حکومتی پالیسی سے مطمئن ہیں؟

شہزاد نّیر۔۔کافی حد تک

تفکر – اردو ادب سے وابستہ لوگوں کے لئیے کوئی پیغام؟

شہزاد نّیر۔۔ لفظ سے سچا رشتہ جوڑیں۔

تفکر – ہماری اس کاوش پر کچھ کہنا چاہیں گے؟

شہزاد نّیر۔۔ڈائریکٹری سی بن جائے گی۔تحسین۔

تفکر – پہچان شعر یا تحریر؟

شہزاد نّیر۔۔ میں تو خود پر بھی کفایت سے اسے خرچ کروں
وہ ہے مہنگائی میں مشکل سے کمایا ہوا شخص

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اُس کی طرف سے آپ ہی خود کو پکار کر
پہروں پھر اُس صدا کا بدن دیکھتے رہو

وہ میرے اپنے تخیّل کا نور تھا جس نے
مرے گمان میں آ کر مجھے پکارا تھا

نگاہِ یار نہ ہو تو نکھر نہیں پاتا
کوئی جمال کی جتنی بھی دیکھ بھال کرے

وہ دیدِلا وجود کس نظر کی گھاٹ اْتر گئی
یہ عمر بھر کا کام تھا ، تمام کیسے ہوگیا

میں تو خود پر بھی کفایت سے اْسے خرچ کروں
وہ ہے مہنگائی میں مشکل سے کمایا ہُوا شخص

عشق وہ ظرف کہ آپ اپنے لہو سے پُر ہے
اس میں حسرت کی جگہ ہے نہ پشیمانی کی

دیکھتا جاتا تھا حیرت سے میں اُس کی آواز
دم بہ دم دل میں بھرے زہر سے نیلی ہوتی

اب مجھ سے ان آنکھوں کی حفاظت نہیں ہوتی
اب مجھ سے ترے خواب سنبھالے نہیں جاتے

چلتے پھرتے اسے بندش کا گماں تک نہ رہے
اُس نے انسان کو اس درجہ کشادہ باندھا

اس سمت سمیٹوں تو بکھرتا ہے اُدھر
دکھ دیتے ہوئے یار نے دامن نہیں دیکھا

ابتدا میں تو اتنا خوش مت ہو
مجھ میں آگے کہیں اداسی ہے

صرف آنکھیں پڑی تھیں رستے می
جب وہ آیا تو جا چکا تھا میں

جہانِ خواب کی منزل کبھی نہیں آئی
زمانے چلتے رہے انتظار کرتے ہوئے

خدائے ارض!میں بیٹی کے خواب کات سکوں
تُو میرے کھیت میں اتنی کپاس رہنے دے

فلک پہ اڑتے ہوئے بھی نظر زمیں پہ رہی
مزاج مجھ کو مقدر سے طائرانہ ملا

خود ہی ملتی گئی کڑی سے کڑی
اچھے لفظوں کا سلسلہ تھا میں

اپنی اڑائی دھول نہ اپنے ہی سر پڑے
چلتے ہوئے ہوا کا چلن دیکھتے رہو

خواب پر انحصار سے پہلے
خواب کا تجزیہ ضروری ھے

صورت ہمدرد جو آیا کہانی کار تھا
چند آنسو دے کے وہ میری کہانی لے گیا

مرے پہلے گنہ کے بعد نیرّ
بہت روئی سرشتِ پاک میری

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…