اس نے پچھلے درد کو کچھ اس طرح تازہ کیا  – آزاد حسین آزاد

 

اس نے پچھلے درد کو کچھ اس طرح تازہ کیا

شہر بھر میں ہاؤ ہو کی اور آوازہ کیا

 

جا رہے ہیں جنگلوں کی اور بھوکے بھیڑیے

بکریوں کے شور سے میں نے یہ اندازہ کیا

 

ایک بیٹی نے نبھائے باپ سے سب عہد یوں

تیل چھڑکا جسم پر اور آگ کو غازہ کیا

 

گل کیے سارے دئیے تکیے نے اپنے ہاتھ سے

دودھیا چادر نے اٹھ کر بند دروازہ کیا

 

صبح کی کرنوں نے کھڑکی سے ہٹائیں چادریں

کیمرے کی آنکھ نے محفوظ خمیازہ کیا

 

تھے پرانی فلم پر سکریچ کافی پڑ گئے

اک نئی سی ڈی خریدی جس کو شیرازہ کیا

 

آزاد حسین آزاد

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

شئیر کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

تبصرے بند ہیں.

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…