( غیــر مطبــوعــہ ) گواچن سے پرے بھی کچھ ہے ؟ …

( غیــر مطبــوعــہ )

گواچن سے پرے بھی کچھ ہے ؟

ہم نا رضامندی کی پیدائش میں
پیدا ہوئے ہی نہیں
اگر ہم پیدا ہوتے
تو ہماری حالت کچھ اور ہوتی
جانے یہ بات کیوں کر تاریخ میں
یوں لکھ دی گئی
کہ جاؤ
آج تم پر کوئی گرفت نہیں
تم سب آزاد ہو
لیکن آج تک مَیں
آزادی ایسے شَـبد کی معنویت سے آشنا نہ ہو سکا
اور نہ ہی اس کی سرشاری کو جی پایا ہوں
محض ایک بوسے کی سکرات میں جینے والے لوگ ہی دیکھ رہا ہوں
جو خود سے بھی یہ سچ کہنے کی حسرت میں پیدا ہوئے نہیں
اور اس خوف میں ہیں
کہیں کوئی یہ کہہ کر گرفت نہ کرلے
اور اس بابت یہ نہ کہہ جائے
یہ تم نے کیسے انگلی میں سگریٹ لینے کی چِنتا پال رکّھی ہے
اور دُھویں کے مرغولے میں خود کو
زمان و مکان کی بندش سے پہلے
آنول تلاشنے نکلے ہو
اور کس کے رَحم کی اذیّت میں دن بھوگ رہے ہو
یہ سب تو ہونا تھا اک دن
کیوں جلدی میں سب کچھ غارت کرنے میں
اپنا گیان لیے پھرتے ہو
جوکہ اب تک
بھیتر سے نکلے نہیں

( کے بی فــراقؔ )


Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

شئیر کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں مصنف سے زیادہ

  1. Sabir Zafar کہتے ہیں

    ایک اداس کر دینے والی نظم

  2. Iftekhar Bukhari کہتے ہیں

    یہ سب تو ہونا تھا اک دن
    کیوں جلدی میں سب کچھ غارت کرنے میں
    اپنا گیان لیے پھرتے ہو
    جوکہ اب تک
    بھیتر سے نکلے نہیں
    نہایت عمیق اور خیال آفریں نظم، بہت داد و تحسین قبول فرمائیں

تبصرے بند ہیں.

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…