ڈیلی آرکائیو

2017-12-08

وہ دل نواز ہے لیکن نظر شناس نہیں ناصر کاظمی وہ دل …

وہ دل نواز ہے لیکن نظر شناس نہیں ناصر کاظمی وہ دل نواز ہے لیکن نظر شناس نہیں مرا علاج مرے چارہ گر کے پاس نہیں تڑپ رہے ہیں زباں پر کئی سوال مگر مرے لیے کوئی شایان التماس نہیں ترے جلو میں بھی دل کانپ کانپ اٹھتا ہے مرے مزاج کو آسودگی بھی راس…

ﻭﻓﺎ ﮐﺎ ﻋﮩﺪ ﺗﮭﺎ ﺩﻝ ﮐﻮ ﺳﻨﺒﮭﺎﻟﻨﮯ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﻭﮦ ﮨﻨﺲ ﭘﮍﮮ ﻣﺠ…

ﻭﻓﺎ ﮐﺎ ﻋﮩﺪ ﺗﮭﺎ ﺩﻝ ﮐﻮ ﺳﻨﺒﮭﺎﻟﻨﮯ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﻭﮦ ﮨﻨﺲ ﭘﮍﮮ ﻣﺠﮭﮯ ﻣﺸﮑﻞ ﻣﯿﮟ ﮈﺍﻟﻨﮯ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﺑﻨﺪﮬﺎ ﮨﻮﺍ ﮨﮯ ﺑﮩﺎﺭﻭﮞ ﮐﺎ ﺍﺏ ﻭﮨﯿﮟ ﺗﺎﻧﺘﺎ ﺟﮩﺎﮞ ﺭﮐﺎ ﺗﮭﺎ ﻣﯿﮟ ﮐﺎﻧﭩﮯ ﻧﮑﺎﻟﻨﮯ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﮐﻮﺋﯽ ﻧﺴﯿﻢ کا ﻧﻐﻤﮧ، ﮐﻮﺋﯽ ﺷﻤﯿﻢ ﮐﺎ ﺭﺍﮒ ﻓﻀﺎ ﮐﻮ ﺍﻣﻦ ﮐﮯ ﻗﺎﻟﺐ ﻣﯿﮟ ﮈﮬﺎﻟﻨﮯ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﺧﺪﺍ ﻧﮑﺮﺩﮦ، ﺯﻣﯿﻦ…

ﻭﻗﺎﺭ ﺍﺣﻤﺪ ! ﺗﻢ ﮈﺭ ﮔﺌﮯ ﮨﻮ ﻧﮧ ﮨﮯ ﻧﮧ surprise, Surpri…

ﻭﻗﺎﺭ ﺍﺣﻤﺪ ! ﺗﻢ ﮈﺭ ﮔﺌﮯ ﮨﻮ ﻧﮧ ﮨﮯ ﻧﮧ surprise, Surprise ﻣﯿﮟ ﺟﺎﻥ ﺩﮮ ﺩﯼ ﻣﯿﮟ ﻧﮯ ﺍﺭﮮ ﺑﺘﺎﺅ ﻧﮧ ﺍﺏ ﮐﯽ ﺑﺎﺭ ﮈﺍﺋﺮﯼ ﮐﯿﻮﮞ ﻧﮩﯿﮟ ﭘﮍﮬﯽ ﺗﻢ ﻧﮯ ؟ ﮐﮩﺎ ﺑﮭﯽ ﺗﮭﺎ ﭘﮍﮪ ﻟﻮ ﺗﻢ ﺷﺮﻣﺎ ﮔﺌﮯ؟ ﺷﺮﻡ ﺁ ﮔﺌﯽ ﺗﻤﮩﯿﮟ ؟ ﺍﭼﮭﺎ ﺑﺘﺎﺅ ﺟﺐ ﻧﮑﺎﺡ ﺳﮯ ﺑﮭﺎﮒ ﮐﺮ ﺟﺎ ﺭﮨﮯ ﺗﮭﮯ ﺗﻮ ﺭﺳﺘﮯ ﻣﯿﮟ ﮐﮩﯿﮟ ﻧﮩﯿﮟ…

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…