براؤزنگ ٹیگ

مریم جہانگیر

محبت اب اور نہیں – ساتویں قسط

اس کے کنول ہاتھوں کی خوشبو کتنی سبز آنکھوں نے پینے کی خواہش کی تھی کتنے چمکیلے بالوں نے چھوئے جانے کی آس میں خود کو، کیسا کیسا بکھرایا تھا کتنے پھول اگانے والے پاؤں اس کی راہ میں اپنی آنکھیں بچھائے پھرتے تھے لیکن وہ ہر خواب کے…

’’یوم بدر‘‘

اللہ ربالعزت نے حضرت محمد مصطفی و مجتبی کو نبوت سے سرفراز فرمایا اور پھر اللہ کے حکم سے ہی مدینہ منورہ میں ہجرت فرمائی۔ کیفار مکہ ہجرت مدینہ کے بعد بھی اللہ کے رسول بر حق اور مومنین کو ایذاء پہنچانے سے باز نہ آئے ۔حضرت محمدﷺ جہاں تک ہو سکا…

تاریخ

14 اگست پاکستان کی آزادی کا دن صرف اور صرف اس حوالے سے جوش اور ولولے کا مظہر بن چکا ہے کہ لوگ جھنڈیوں سے گھروں کو سجاتے ہیں۔ بچے اپنی سائیکلیں تیار کرتے ہیں۔ گاڑیوں پر پرچم لگایا جاتا ہے۔ آزادی کے حقیقی معنی اور آزادی کے سفر کی صعوبتیں…

"وہ” : مریم جہانگیر

وہ مزید تیزی سے دوڑنے لگا جیسے زندگی کے لئے دوڑنے کا حق ہے۔ اور اس کے پیچھے دوڑنے والے بھی ویسے ہی بھاگے آ رہے تھے۔ جیسے انھیں اس کے پیچھے بھاگنا چاہئے تھا۔ وہ تھک چکا تھا، اس کے پاؤں کے جوتے کہیں راستے میں  ہی رہ گئے تھے۔ سڑک پر نجانے…

ممتاز قادری سے جنید جمشید تک ……

یہ کہانی اس شخص کی ہے جسے دنیا ۔۔۔ خیر جانے دیجئیے دنیا کی باتوں کو کس نے سمجھا؟ دنیا کی نظریں کہاں دوراندیش ہیں؟ کہاں دنیا والے با حیا کو با حیا ہی مرنے دیتے ہیں .یہ دنیا تو کسی کو جینے بھی نہیں دیتی مرنے بھی نہیں دیتی اور گزرنے کو راستہ…

تاریخ : مریم جہانگیر

14 اگست پاکستان کی آزادی کا دن صرف اور صرف اس حوالے سے جوش اور ولولے کا مظہر بن چکا ہے کہ لوگ جھنڈیوں سے گھروں کو سجاتے ہیں۔ بچے اپنی سائیکلیں تیار کرتے ہیں۔ گاڑیوں پر پرچم لگایا جاتا ہے۔ آزادی کے حقیقی معنی اور آزادی کے سفر کی صعوبتیں…

دانیال طریر، ذکرِ گل۔۔۔۔جو رنگ و بُو دے گیا : مریم جہانگیر

ذکرِ گل۔۔۔۔جو رنگ و بُو دے گیا۔ ہر انسان کے اپنے آپ سے کچھ وعدے ہوتے ہیںاس نے حدود کا کوئی نہ کوئی دائرہ اپنے ارد گرد قائم کر رکھا ہوتا ہے جس سے وہ باہر نہیں نکلنا چاہتا ۔ میں نے بھی خود سے یہ وعدہ کر رکھا تھا کہ میں کبھی بھی ستائشی کالم…

سیرت النبیﷺ : مریم جہانگیر

سیرت النبیﷺ گہری تاریکی نے فرش تا عرش سب کو لپیٹ میں لے رکھا تھا کہ یکا یک عرش پہ لکھا ایک نام روشنی کے میناروں کی بنیاد رکھنے تن کر کھڑا ہوا۔ پھر دیکھنے والوں نے دیکھا کہ اندھیرا اپنی موت آپ مر گیا۔ تمام تر سیاہی خود کشی پر مجبور ہوگئی۔…

زندگی …قتل گاہ : مریم جہانگیر

زندگی ...قتل گاہ (اْس بچے کی جو شکارہوا۔۔۔۔۔) رات کا عمیق اندھیرا روشنیوں کو نگلنے کہ در پے تھا مگر فطری قمقموں یعنی چاند ‘ ستاروں اور برقی قمقموں نے شہر کے بیچوں بیچ بنے اس پارک کو روشنی کے ہالے میں مقید کر رکھا تھا۔ تقریباً رات کے دس…

دو آرزو میں کٹ رہے : مریم جہانگیر

دو آرزو میں کٹ رہے وہ اپنی ٹائی درست کرتے ہوئے کھڑوس باس کے کمرے کی جانب بڑھا.آخری رپورٹ میں تو کسی غلطی کی گنجائش ہی پیدا نہیں ہوتی وہ میں نے خاصی عرق ریزی سے تیار کی تھی.پچھلے پندرہ دنوں میں کوئی چھٹی بھی نہیں کی... ہاں! دو دفعہ آفس…

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…