ایک بت پرست کی پکار اور اس کی قدر دانی: – ایک بت پ…

ایک بت پرست کی پکار اور اس کی قدر دانی:

ایک بت پرست تھا، وہ پریشان حال ہوکر ساری رات اپنے بت سے دعائیں مانگتا رہا -اور وہ اس کے سامنے صنم صنم پکارتا رہا -مگر کوئی بات نہ بنی -حتی کہ اسے اونگھ آنے لگی -اونگھ میں اس کی زبان سے یا صمد یا صمد نکل گیا -صمد اللہ رب العزت کا نام ہے -جیسے ہی اس نے صمد کہا اللہ رب العزت کی رحمت اس کی طرف متوجہ ہوئی اور
پروردگار عالم نے فرمایا :

لبیک یا عبدی

(میرے بندے میں حاضر ہوں )

جب پروردگار عالم نے یہ جواب دیا تو فرشتے حیران ہوکر پوچھنے لگے کہ اے پروردگار عالم! وہ ایک بت پرست ہے، وہ ساری رات بت کے نام کی تسبیح جپتا رہا، اس نے اونگھ کی وجہ سے غفلت میں یا صمد کہا ہے اور اس کی طرف متوجہ ہو رہے ہیں -اللہ رب العزت نے فرمایا،ٹھیک ہے وہ بت پرست تھا اور ساری رات بت کے نام کی تسبیح جپتا رہا، اس بت نے اس کو کوئی جواب نہ دیا اور اس نے اونگھ میں مجھے پکارا، اگر میں بھی جواب نہ دیتا تو پھر مجھ میں اور بت میں کیا فرق رہ جاتا–

جواب چھوڑیں