( غیــر مطبــوعــہ ) کس کو روشن بنا رہے ہو تم ؟ ا…

( غیــر مطبــوعــہ )

کس کو روشن بنا رہے ہو تم ؟
اِتنا جو بجھتے جا رہے ہو تم

پھول تو ایسے خوف میں پڑے ہیں
جیسے پتھر اُٹھا رہے ہو تم

میں تمھیں مسخرہ نہ کہہ دوں کہیں
جتنا مجھ کو ہنسا رہے ہو تم

گاؤں کی جھاڑیاں بتا رہی ہیں
شہر میں گُل کِھلا رہے ہو تم

ایک تو ہم اُداس ہیں اُس پر
شاعروں کو بُلا رہے ہو تم

قیمتی ہونا چاہتے ہیں لوگ
کس کو اپنا بتا رہے ہو تم ؟

اور کس نے تمھیں نہیں دیکھا
اور کس کے خدا رہے ہو تم

پھول کس نے قبول کرنے ہیں
جب تلک مسکرا رہے ہو تم

لوگ پاگل بنائے جا چکے ہیں
اب نیا کیا بنا رہے ہو تم ؟

( مُــژدُم ؔ خــان )


Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

شئیر کریں

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…