رخ پہ گیسو جو بکھر جائیں گے ہم اندھیرے میں کدھر ج…

رخ پہ گیسو جو بکھر جائیں گے
ہم اندھیرے میں کدھر جائیں گے

اپنے شانے پہ نہ زلفیں چھوڑو
دل کے شیرازے بکھر جائیں گے

یار آیا نہ اگر وعدے پر
ہم تو بے موت کے مر جائیں گے

اپنے ہاتھوں سے پلا دے ساقی
رند اک گھونٹ میں تر جائیں گے

قافلے وقت کے رفتہ رفتہ
کسی منزل پہ ٹھہر جائیں گے

مسکرانے کی ضرورت کیا ہے
مرنے والے یوں ہی مر جائیں گے

ہو نہ مایوس خدا سے بسملؔ
یہ برے دن بھی گزر جائیں گے

بسملؔ عظیم آبادی

المرسل: فیصل خورشید


Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

شئیر کریں

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…