دل میں جب کبھی تیری یاد سو گئی ہوگی چاند بجھ گی…

دل میں جب کبھی تیری یاد سو گئی ہوگی
چاند بجھ گیا ہوگا، رات رو پڑی ہوگی

کیا خبر کہ ایسے میں تم نے کیا کیا ہوگا
مجھ سے ترکِ الفت کی بات جب چلی ہوگی

بے قرار دنیا میں تیرے لوٹ آنے تک
جاگتی تمنا بھی تھک کے سو چکی ہوگی

کون ایسے قصوں کا اختتام چاہے گا
جن میں تیری زلفوں کی بات آ گئی ہوگی

آپ کیوں پریشاں ہیں، آپ تو نہیں روئے
آپ کی نگاہوں میں میری بے بسی ہوگی

(یوسف تقی)
المرسل :-: ابوالحسن علی ندوی(بھٹکلی)

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

شئیر کریں
4 تبصرے
  1. اردو کلاسک کہتے ہیں

    یوسف تقی
    تیری یادیں بھی نہیں غم بھی نہیں تو بھی نہیں
    کتنی ویران ہے یہ آنکھ کہ آنسو بھی نہیں

  2. Mudassar Gujjar کہتے ہیں

    اچھا کلام ہے جی …

  3. Abdul Mannan کہتے ہیں

    اعلی

  4. Sufian Aslam کہتے ہیں

    Rana Muzaffar Hussain

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…