ادارے، عزت اور احتساب – وقار احمد

میجر راجہ زاہد نے اپنا تین مہینے کا بجلی کا بل جمع نہیں کرایا تھا- واپڈا کی طرف سے لائن میں محبوب احمد اس کے گھر پہنچا تا کہ اس کا بجلی کا کنکشن کاٹا جا سکے- وہاں میجر نے مزاحمت کی، دونوں میں جھگڑا ہوا، میجر نے اپنے گھر سے ہتھیار لا کر فائر کھول دیا تو بیچارے لائن مین کی موقع پر ہی موت ہو گئی- اس کے بعد میجر نے اپنے کزن کے ساتھ مل کر اس کی لاش اپنی گاڑی میں ڈالی اور گجر خان میں لے جا کر دفنا دی- انتہائی غلط، قابل نفرت، قابل شرمندگی اور گھناؤنی حرکت کی میجر زاہد نے- یہاں تک تو آپ سب کو پتا ہو گا مگر اس کے بعد کیا ہوا ؟

اس کے بعد یہ ہوا کہ چونکہ کسی کو نہیں پتا تھا کہ اس غریب لائن مین کے ساتھ کیا ہوا، اس لئے واپڈا کے لائن مینوں نے احتجاج شروع کر دیا- واپڈا کے ریکارڈ کے مطابق جس پتے کا کنکشن وہ کاٹنے گیا تھا وہ موجود تھا- آرمی کو اس بات کا پتا چلا تو فوری طور پر میجر کو فوج نے تحویل میں لے کر انکوائری شروع کر دی اور آٹھ سے دس گھنٹے کے اندر میجر نے اپنا جرم قبول کر لیا- جس کے فورا بعد میجر کو پولیس کے حوالے کر دیا گیا- اس کے خلاف ایف آ ئی آر درج کر لی گئی اور ابھی وہ جسمانی ریمانڈ پر ہے بالکل کسی عام سول ملزم کی طرح-اور قانونی و عدالتی کاروائی بھگت رہا ہے فوج سے وہ فارغ ہو چکا

اب اپنے دل پر ہاتھ رکھیں اور بتائیں کہ ایسا ہی کوئی واقعہ کسی سیاستدان یا اس کے کسی پٹھے سے ہو جائے تو کیا اتنا ہی وقت لگے گا گرفتاری میں اور بنیادی انکوائری میں؟ کیا اس واقعہ کے بعد فوج نے جس طرح سے اپنے افسر کو نکالا اور پولیس کے حوالے کیا، کیا باقی لوگ ایسی کسی حرکت کے بارے میں سوچتے ہوے بھی خوفزدہ ہوں گے کہ نہیں؟ دور کیا جانا، ماڈل ٹاون لاہور کی وڈیوز تک موجود ہیں، آج کے دن تک کتنے اصل ملزموں کو گرفتار کیا گیا؟

یہ ہوتا ہے فرق ایک ادارے میں اور سیاست میں آنے والے بھیڑ کی کھال میں بھیڑیوں اور شیروں میں

پس تحریر: فوج کو مزید انکوائری کی ضرورت ہے یہ جاننے کے لئے کہ ایسے مجرمانہ رجحانات رکھنے والا شخص فوج میں بھرتی کیسے ہو گیا؟ اس کی سروس رپورٹس کیا کہتی ہیں؟ کیا اس میں یہ رجحانات شروع سے تھے یہ بعد میں پیدا ہوے؟ اگر بعد میں پیدا ہوے تو ایسے رجحانات کی وجہ اور حالات کا پتا چلا کر ان کو ختم کیا جا سکے تا کہ ایسے واقعات کا بروقت تدارک کیا جا سکے- اور مجھے یقین ہے کہ فوج پہلے سے ہی ان خطوط پر کام کر رہی ہو گی کیونکہ ایسے واقعات کی وجہ سے پورے ادارے کی عزت پر حرف آتا ہے- بہت ہی قابل تعریف اور قابل تقلید کام فوج کا کہ اپنے آفیسر کو بچانے کی کوشش نہیں کی-

(وقار احمد)

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

شئیر کریں

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…