تمثیل . کتنی صدیوں کے انتظار کے بعد قربتِ یک نفس ن…

تمثیل
.
کتنی صدیوں کے انتظار کے بعد
قربتِ یک نفس نصیب ہوئی
پھر بھی تو چُپ اداس کم آمیز
.
اے سلگتے ہوئے چراغ بھڑک
درد کی روشنی کو چاند بنا
کہ ابھی آندھیوں کا شور ہے تیز
.
ایک پل مرگِ جاوداں کا صلہ
اجنبیت کے زہر میں مت گھول
مجھ کو مت دیکھ لیکن آنکھ تو کھول
.
احمد فراز

جواب چھوڑیں