بھوک

ڈاکٹر شاکرہ نندنی لاہور میں پیدا ہوئی تھیں اِن کے والد کا تعلق جیسور بنگلہ دیش (سابق مشرقی پاکستان) سے تھا اور والدہ بنگلور انڈیا سے ہجرت کرکے پاکستان آئیں تھیں اور پیشے سے نرس تھیں شوہر کے انتقال کے بعد وہ شاکرہ کو ساتھ لے کر وہ روس چلی گئیں تھیں. شاکرہ نے تعلیم روس اور فلپائین میں حاصل کی۔ سنہ 2007 میں پرتگال سے اپنے کیرئیر کا آغاز بطور استاد کیا، اس کے بعد چیک ری پبلک میں ماڈلنگ کے ایک ادارے سے بطور انسٹرکٹر وابستہ رہیں۔ حال ہی میں انہوں نے سویڈن سے ڈانس اور موسیقی میں ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی ہے۔ اور اب ایلائیٹ لزبن ماڈل ایجنسی، پُرتگال میں ڈپٹی ڈائیریکٹر کے عہدے پر فائز ہیں.

آج میرے کنسلٹنٹ ڈاکٹر جوز فونتانا (Praça José Fontana) نے مجھے ایک مریض ایمرجنسی میں ریفر کیا۔ مجھے سارے کام چھوڑ کر اسے دیکھنا پڑا ۔

اکتیس برس کا آدمی جس نے اپنا نام سدونیوو پیز (Sidónio Pais) بتایا، میرے سامنے بچوں ی طرح ہچکیوں سے رو رہا تھا۔

میں نے ایک لمبی خاموشی کی بعد اس پوچھا کہ آج ایسا کیا ہوا جو تمہیں اتنے غمزدہ ہو۔

 اس نے مجھے ایسے دیکھا جیسے میرے سوال نے اسے اور رنجیدہ کر دیا ہو۔

اس نے ایک آہ بھری ۔۔ ۔۔

ڈاکٹرآج مجھ سے کسی نے پوچھا کہ میں کیوں نشہ کرتا ہوں؟

میں سوچ رہی تھی کہ یہی سوال تو مجھے بھی کرنا تھا۔

پھر ۔ ۔۔۔ تم نے کیا جواب دیا ۔۔ میں نے اس کہ طرف ٹشو پیپر بڑھاتے ہوئے پوچھا ۔۔

ڈاکٹر میں یہ سوال جب خود سے پوچھتا ہوں تو مجھے ایک ہی جواب سمجھ آتا ہے۔

بھوک۔

مجھے نہیں معلوم ڈاکٹر کیا بھوک اتنی طاقتور ہوتی ہے کہ وہ میری ماں کو مجھے سڑکوں پر رلنے کے لئے چھوڑ جانے پر مجبور کردے اور پھر یہی بھوک مجھے نشہ آور بھی بنا دے؟

آج صبح آٹھ بج کر دس منٹ سے “ بھوک “ ایک سوالیہ نشان بن کر میرے آس پاس بھٹک رہی ہے اور میں چپ ہوں۔۔۔۔۔۔

Real Eyes I Realize

جواب چھوڑیں