اِک جھلک تھی ، حیا کی چہرے پر رنگ اُس شوخ کا ، شہ…

اِک جھلک تھی ، حیا کی چہرے پر
رنگ اُس شوخ کا ، شہابی تھا
منہ سے پُھول جھڑتے تھے ، آزر
لہجہ بھی یار کا گلابی تھا۔

”آزر جمال“


بشکریہ
https://www.facebook.com/Inside.the.coffee.house

جواب چھوڑیں