اُس کے دشمن ہیں بہت آدمی اَچّھا ہوگا وہ …

اُس کے دشمن ہیں بہت آدمی اَچّھا ہوگا
وہ بھی میری ہی طرح شہر میں تنہا ہوگا

اتنا سچ بول کہ ہونٹوں کا تبسّم نہ بُجھے
روشنی ختم نہ کر آگے اندھیرا ہوگا

پیاس جس نہر سے ٹکرائی وہ بنجر نکلی
جس کو پیچھے کہیں چھوڑ آئے وہ دریا ہوگا

ایک محفل میں کئی محفلیں ہوتی ہیں شریک
جس کو بھی پاس سے دیکھو گے اکیلا ہوگا​

میرے بارے میں کوئی رائے تو ہوگی اُس کی
اُس نے مجھ کو بھی کبھی توڑ کے دیکھا ہوگا

نداؔ فاضلی

از:-شہر میں گاؤں (کُلّیات) ص ۳۱۷

اِنتِخاب
سفیدپوش


Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

شئیر کریں
5 تبصرے
  1. گمنام کہتے ہیں

    Hifza Ali Sherazi

  2. گمنام کہتے ہیں

    Umda

  3. گمنام کہتے ہیں

    شاندار

  4. گمنام کہتے ہیں

    Wah

  5. گمنام کہتے ہیں

    شاندار

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…