ارشد محمود کی لازوال دُھن بہت ھی خوبصورتی سے گائی …


ارشد محمود کی لازوال دُھن بہت ھی خوبصورتی سے گائی اور یہ نظم ٹینا کی پہچان بن گئی۔ شاید ھی کوئی محفل ھو جس میں اُن سے اِس نظم کی فرمائش نہ ھوتی ھو۔

آئیے فیض کی یاد میں سجائی گئی ایک محفل میں چلتے ھیں جہاں ٹینا ثانی یہی نظم گا رھی ھیں۔

"بہار آئی”

بہار آئی تو جیسے یکبار
لوٹ آئے هیں پھر عدم سے
وہ خواب سارے ، شباب سارے

جو تیرے ھونٹوں پہ مر مِٹے تھے
جو مِٹ کے ھر بار ، پِھر جئے تھے

نِکھر گئے ھیں گلاب سارے
جو تیری یادوں سے مُشکبُو هیں
جو تیرے عُشّاق کا لہو ھیں

اُبل پڑے ھیں عذاب سارے
ملالِ احوالِ دوستاں بھی
خُمارِ آغوشِ مہوِشاں بھی

غُبارِ خاطر کے باب سارے
تیرے ، همارے سوال سارے
جواب سارے

بہار آئی تو کھُل گئے هیں
نئے سِرے سے حساب سارے

"فیض احمد فیض”

بشکریہ
https://www.facebook.com/Inside.the.coffee.house

Leave your vote

0 points
Upvote Downvote

Total votes: 0

Upvotes: 0

Upvotes percentage: 0.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

شئیر کریں
5 تبصرے
  1. گمنام کہتے ہیں

    یہ میری فیورٹ ھے

  2. گمنام کہتے ہیں

    Super excellent ghazal.

  3. گمنام کہتے ہیں

    Nice

  4. گمنام کہتے ہیں

    Wah wah wah Kamal

  5. گمنام کہتے ہیں

    سر یہ راگ پہاڑ ی ھے؟؟؟

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…