بغیر اس کے اب آرام بھی نہیں آتا وہ شخص…


بغیر اس کے اب آرام بھی نہیں آتا
وہ شخص جس کا مجھے نام بھی نہیں آتا

اُسی کی شکل مجھے چاند میں نظر آئے
وہ ماہ رُخ جو لبِ بام بھی نہیں آتا

کروں گا کیا جو محبت میں ہو گیا ناکام
مجھے تو اور کوئی کام بھی نہیں آتا

چُرا کے خواب وہ آنکھوں کو رہن رکھتا ہے
اور اُس کے سر کوئی الزام بھی نہیں آتا

غلام محمد قاصرؔ

از:-اک شعر ابھی تک رہتا ہے(کُلّیاتِ قاصرؔ)

انتخاب
سفیدپوش

Leave your vote

1 point
Upvote Downvote

Total votes: 1

Upvotes: 1

Upvotes percentage: 100.000000%

Downvotes: 0

Downvotes percentage: 0.000000%

شئیر کریں
1 تبصرہ
  1. اردو کلاسک کہتے ہیں

    Imad Kasir

جواب چھوڑیں

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…