وبا میں لکھی مختصرکہانیاں مترجم: محمدجمیل اختر …

وبا میں لکھی مختصرکہانیاں
مترجم: محمدجمیل اختر

مختصرکہانی نمبر 1 : میرے نئے پڑوسی
مصنفہ: پینی کوہن

مکان نمبر دوسوچار میں نئے پڑوسی آئے تو میں نے ایک ”ویلکم نوٹ“ لکھ کر اُن کے دروازے سے اندر پھینکا،جس کے آخر میں لکھا تھا
”مکان نمبر دوسو پانچ“ کی طرف سے۔۔۔
وہ اپنے گھر کے دروازے پر کھڑے ہوکر اونچی آواز میں چلانے لگے، شاید مجھے اُنہیں ”ویلکم نوٹ“کے متعلق بتانا چاہیے لیکن میں ایسا نہیں کرتا، ممکن ہے اُنہیں میرا پیانو بجانا ناپسند ہو۔۔۔۔جب کہ دوسری طرف مکان نمبر دوسو چھ میں موجود آدمی کو میرا پیانو بجانا بے حد پسند ہے، وہ کافی خوش مزاج آدمی ہے، تالاب کنارے کئی بار ہماری گفتگو ہوئی تھی۔۔
اِس بہار تالاب کنارے کوئی بھی بات نہ ہوگی کیوں کہ وبا کی وجہ سے وہ بند ہے۔۔
کیاہم پھر کبھی مل سکیں گے؟
کیا کبھی وہ میرے بارے سوچیں گے؟

مختصرکہانی نمبر 2 : مجھے کرونا مت کہو
مصنف: یولا۔ایم۔کیسینری

اُس کا اصل نام ٹیارا تھا۔۔۔
لیکن وبا پھوٹنے کے چند ہی روز بعد لوگ جو اُس کا نام جانتے تھے، اُسے ”کرونا“ کہہ کر چھیڑنے لگے۔۔شروع شروع میں اُس نے بالکل توجہ نہ دی لیکن ایک بار ریل گاڑی میں اِس نام سے ہونے والی رسوائی کے بعد،اُسے اِس لفظ سے حقارت محسوس ہونے لگی۔
لوگ اُس کی جانب ایسے دیکھ رہے تھے جیسے وہ وائرس ہو،جس سے بچنا چاہیے۔۔۔حتٰی کہ اُس کے سکول کے دو دوستوں نے بھی اُس کا مذاق اُڑیا۔وہ اِن گھورتی ہوئی نگاہوں کو برداشت نہ کرسکی اور اگلے ہی اسٹیشن پر یہ کہتے ہوئے اُتر گئی۔
”مجھے کرونا مت کہو“ ایسے میں آنسو اُس کی آنکھوں سے رواں تھے۔
ایک ہفتہ بعد اُسے گلے میں شدید درد محسوس ہوا۔۔ٹیسٹ کی رپورٹ میں لکھا تھا۔۔اُس کے اندر وائرس ہے۔۔۔

مختصرکہانی نمبر 3 : کُھردرے بالوں والا کتا
مصنف: فِلس زکاس زیویسکا

”اینا۔۔۔براہ ِمہربانی کتے کو سیر کے لیے لے جاؤ“
اینا نے سرکو ہلکے سے جُنبش دے کر "ہاں" کہا۔۔اور میری سیڑھیاں چڑھتے ہوئے اوپر کمرے میں چلی گئی۔جب وہ نیچے اُتری تو اُس نے دیکھا کہ اینا شام کا کھانا بنانے میں مصروف ہے۔میری نے سوالیہ نگاہوں سے اِدھر اُدھر نظر دوڑائی۔
”کتا کہاں ہے؟“اُس نے پوچھا
اینا نے پلٹ کر دیکھا اور کہا ”میں اُسے سیر کرانے لے گئی تھی“
ؔؔ”صحیح تو اب وہ کہاں ہے؟“
”مجھے معلوم نہیں، میں اُسے گیٹ تک لے گئی اور وہ سڑک پار کر کے دوسری طرف چلا گیا۔“
اور یہی وہ لمحہ تھا جب میری کو احساس ہوا کہ اگرچہ ”اینا“ اِس وقت مارکیٹ میں سب سے بہترین ”ربوٹ“ ہے لیکن پھر بھی کوئی کام کہتے ہوئے جملے کواحتیاط سے مکمل کرنا پڑتا ہے۔۔۔

ختم شُد

بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/2772357386328110

جواب چھوڑیں