پلتزر انعام یافتہ جینیفر ایگن (Jennifer Egan) کا ی…

پلتزر انعام یافتہ جینیفر ایگن (Jennifer Egan) کا یہ تیسرا ناول ہے جو 2006ء میں شائع ہوا اور بیسٹ سیلر بنا۔

ایگن کے اب تک چھپنے والے ناول درج ذیل ہیں:

1- دا انویسیبل سرکس (The invisible circus) 1994ء

2- لک ایٹ می (Look at me) 2001ء

3- دا کیپ (The keep) 2006ء

4- آ وزٹ فرام دا گون سکواڈ (A visit from the goon squad) 2010ء

5- مینھیٹن بیچ (Manhattan Beach) 2017ء

2011ء میں جینیفر ایگن نے اپنے ناول "آ وزٹ فرام دا گون سکواڈ" کے لیئے پلتزر انعام جیتا۔

حال ہی میں نشر ہونے والی ٹی وی سیریز ڈیفنڈنگ جیکب (Defending Jacob) جو خود ایک ناول پر مبنی ہے میں ان کے ناول "مینھیٹن بیچ" کا مختصر تذکرہ بھی آپ کو ان کے ناول پڑھنے پر اکساتا ہے۔

"دا کیپ" حیرت میں مبتلا کر دینے والی کتاب ہے۔ ایک کہانی کے اندر ایک اور کہانی۔ ڈینی نے اپنے کزن ہووی کے ساتھ بچپن میں ایک خوفناک شرارت کی، جس سے ان کی زندگیاں آگے چل کر متاثر ہوئیں۔ بیس سال بعد، ہووئی ایک کروڑ پتی ہے اور ایک شاہانہ زندگی بسر کر رہا ہے، اس نے یورپ میں ایک قدیم قلعہ خریدا اور اسے ہوٹل بنانا چاہتا ہے، مشکلوں میں گھرے ڈینی کو وہ وہاں بلا لیتا ہے۔ اس ناول میں دو کہانیاں ساتھ ساتھ چلتی ہیں، ایک میں قلعے اور اس کے گرد و نواح میں ہونے والے پراسرار واقعات جو اسے گوتھک (gothic) بناتے ہیں، خاص کر قلعے کے بلند مینار (جسے کیپ کہا گیا ہے) میں رہنے والی 98 سالہ بڑھیا اور اس اس کی پراسرار شخصیت اور دوسری طرف جیل میں ایک رائیٹنگ کی کلاس، جہاں رے بیٹھ کر یہ کہانی لکھ رہا ہے اور ہولی (holly) کو دیتا ہے جو اس کی استاد ہے۔ ہولی بعد میں اس کہانی کے اندر موجود جگہوں پر جانے کا سوچتی ہے۔ کیا یہ حقیقت ہے یا صرف ایک کہانی ہے جو رے نے اپنی جیل میں لکھنے کی کلاس کے لئے تخلیق کی ہے؟ یا محض خیالی چیزوں سے بنی ایک کہانی ہے؟؟ یہ ناول آخر تک آپ کی دلچسپی کو برقرار رکھتا ہے اور اختتام پر مزید کئی سوال آپ کو دے جاتا ہے، جس کے لیئے آپ اسے دوبارہ پڑھنے کے متعلق سوچیں گے۔ اگر آپ نے ابھی تک جینیفر ایگن کو نہیں پڑھا تو اس ناول سے ہی شروع کریں۔

راشد بٹ


بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/2773689522861563

جواب چھوڑیں