Do not stand at my grave and weep by Mary Elizab…

Do not stand at my grave and weep
by Mary Elizabeth Frye

شاعرہ: میری الزبتھ فرائی (یو ایس اے)
"مت رونا"
اردو ترجمہ: ناہید وِرک (مشی گن – یو ایس اے)

مری قبر پر فاتحہ پڑھنے کو تم جب آؤ
تو ہر گز نہ رونا؛
کہ اس قبر میں، میں نہیں
کوئی اور دفن ہے۔
میں ابھی جاگتی ہوں
مجھے نیند سے کیا علاقہ۔

کہ میں تو
برس ہا برس سے
خراماں ہوا ہوں۔
چمکتی ہوئی برف پر
میں چمک ہیرے کی ہوں۔
پکی فصل پر
اپنے سورج کی میں روشنی ہوں،
خزاں میں جو برسے
وہ نرم و ملائم سی بارش ہوں میں۔

سویرے کی مدھم معطّرخموشی میں
جب نیند سے جاگو تو دیکھنا،
دائروں میں
خموشی سے پرواز بھرتے
پرندوں کا دلکش، حسیں
ایک منظر ہوں میں۔
رات کو آسماں پر چمکتے
ستاروں میں سے
نرم و نازک ستارہ ہوں میں۔

مری قبر پر فاتحہ پڑھنے کو تم جب آؤ
تو ہر گز نہ رونا؛
کہ اس قبر میں، میں نہیں
کوئی اور دفن ہے۔
میں تو زندہ ہوں۔
(ترجمہ: ناہید وِرک)

Do not stand at my grave and weep" by Mary Elizabeth Frye

Do not stand at my grave and weep;
I am not there. I do not sleep.

I am a thousand winds that blow.
I am the diamond glints on snow.
I am the sunlight on ripened grain,
I am the gentle autumn rain.

When you awaken in the morning’s hush,
I am the swift uplifting rush
Of quiet birds in circled flight.
I am the soft stars that shine at night.

Do not stand at my grave and cry;
I am not there. I did not die.

بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/2804332933130555

جواب چھوڑیں