اپنی ذات کو پہچانو / فرانز کافکا‏Erkenne Dich selb…

اپنی ذات کو پہچانو / فرانز کافکا
‏Erkenne Dich selbst / Franz Kafka
اپنی ذات کو پہچانو کا مطلب یہ نہیں:
اپنا مشاہدہ کرو
مشاہدہ کرو، یہ لفظ تو اژدھے کے ہیں۔
اس کا مطلب ہے:
خود کو اپنے اعمال کا مختار بناؤ۔
جب بن جاؤ پھر
تم اپنے اعمال کے مختار
تب پہچانو کا مطلب ہے:
فراموش کر دو خود کو!
توڑ دو خود کو!
جو کچھ بھی برا ہے۔
اپنے اندر بہت گہرائی میں جب اترو، صرف اسی وقت
انسان اپنے اندر سے اچھائی کی آواز بھی سنتا ہے
جو کہتی ہے:
’’خود کو وہ بنانے کے لیے، جو تم ہو۔‘‘
(شاعر: فرانز کافکا، جرمن سے اردو قالب: مقبول ملک)


بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/2806213429609172

جواب چھوڑیں