Do not stand at my grave Mary Elizabeth Frye (19…

Do not stand at my grave
Mary Elizabeth Frye (1905-2004)
Translation:Shahid Azad

Do not stand at my grave and weep
I am not there. I do not sleep.
I am a thousand winds that blow.
I am the diamond glints on snow.
I am the sunlight on ripened grain.
I am the gentle autumn rain.
When you awaken in the morning's hush
I am the swift uplifting rush
Of quiet birds in circled flight.
I am the soft stars that shine at night.
Do not stand at my grave and cry;
I am not there. I did not die.

‎مری لحد پہ کھڑے
‎نہ یوں تم بہاؤ آنسو
‎ میں قبر اندر کہیں نہیں ہوں
‎نہ آنکھیں موندے میں سو رہا ہوں
‎ میں ہر سو چلتی ہواؤں اندر رواں دواں ہوں
‎میں برف سے منعکس
‎اک الماس کی چمک ہوں
‎ میں پکتی فصلوں پہ ہنستے خورشید کی کرن ہوں
‎سکوت سحری میں آنکھ کھولو
‎تو چپ پرندوں کی
‎سوئے افلاک تیز تر سی
‎دائرے بناتی
‎اڑان میں ہوں
‎میں پت جھڑوں کی لطیف برکھا
‎ شب سیاہ میں دمکتے تاروں کا سلسلہ ہوں
‎گور میری پہ تم نہ ٹھہرو
‎نہ میری خاطر کرو یہ گریہ
‎لحد میں کب ہوں
‎کہاں مرا ہوں

مترجم:: شاہد آذاد

بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/2152388161658372

جواب چھوڑیں