دنیا، دکھ اور مسکراہٹ دنیا اور زندگی سے پیار کرنا،…

دنیا، دکھ اور مسکراہٹ
دنیا اور زندگی سے پیار کرنا، تکلیف دہ حالات میں بھی محبت کرنا، سورج کی ہر کرن کے سامنے تشکر اور کھلے پن کے ساتھ کھڑے ہو جانا، اور دکھوں کے وقت بھی مسکرانا سرے سے بھول ہی نہ جانا — ہر اصلی شاعری کا یہ سبق کبھی پرانا نہیں ہوتا اور یہی سبق پہلے کے مقابلے میں آج کہیں زیادہ ضروری اور بہت قابل غور ہے۔
(’ہَیرمان ہَیسے: مشاہدات‘ سے ایک اقتباس، جرمن سے اردو ترجمہ: مقبول ملک)
Die Welt und das Leben zu lieben,auch unter Qualen zu lieben, jedem Sonnenstrahl dankbar offenstehen und auch im Leid das Lächeln nicht ganz zu verlernen – diese Lehre jeder echten Dichtung veraltet nie und ist heute notwendiger und dankenswerter als je.
(Hermann Hesse: Betrachtungen und Berichte)


بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/2839324942964687

جواب چھوڑیں