*کارمین بالسیلز: خاتون جس نے ہسپانوی ادب دنیا کے س…

*کارمین بالسیلز: خاتون جس نے ہسپانوی ادب دنیا کے سامنے پیش کیا۔*

"کیا تم مجھ سے پیار کرتی ہو، کارمین؟ فون کے دوسری طرف سے گبرئیل گارشیا مارکیز نے پوچھا۔ میں اس کا جواب نہیں دے سکتی، تم میری آمدنی کا ایک تہائی ہو۔" یہ الفاظ تھے کارمین بالسیلز کے.

ایک اور خبر جو کارمین کے متعلق ہسپانوی ادبی حلقوں میں لمبے عرصے تک گردش میں رہی وہ یہ تھی کہ وہ اپنے آفس ڈیسک کے اوپر والے دراز میں ایک پستول رکھتی ہیں، جو کارمین کو ماریو ورگاس یوسا نے بطور تحفہ دیا تھا۔ ایک ہسپانوی پبلشر نے اس متعلق کہا کہ "وہ ایک سپرلٹریری ایجنٹ ہیں، جو کسی کو بھی قتل کرنے کا لائسنس رکھتی ہیں۔ جیمز بانڈ کی طرح"۔

جی ہاں یہاں بات ہو رہی ہے کارمین بالسیلز (Carmen Balcells) کی۔ جنہوں نے 1950ء کی دہائی کے وسط سے بطور لٹریری ایجنٹ اپنے کیرئیر کا آغاز کیا اور پھر دیکھتے ہی دیکھتے ہسپانوی ادب کو بین الاقوامی قاری سے یوں متعارف کروایا جس کی شاید ہی کوئی دوسری مثال ہو اور ہسپانوی زبان کی اشاعت کو ہمیشہ کے لئے تبدیل کردیا۔ بالسیلز 9 اگست 1930ء کو سپین میں پیدا ہوئیں اور 20 ستمبر 2015ء کو پچاسی برس کی عمر میں بارسلونا سپین میں وفات پائی۔

اپنے طویل کیرئیر میں انہوں نے درجنوں ادیبوں کی بطور لٹریری ایجنٹ نمائندگی کی۔ آگے چل کر ان میں سے چھ کو ادب کے نوبیل انعام سے نوازا گیا۔ ان میں پبلو نروڈا، گبرئیل گارشیا مارکیز، ماریو ورگاس یوسا، کیمیلو حوزے سیلا، ونسنٹ الیگزینڈرے شامل ہیں۔

گبرئیل گارشیا، حوان مارسے اور دیگر کئی ادیبوں نے اپنے ناول ان سے منسوب کیئے اور بہت سے ناولوں میں ان کی شخصیت کو بطور کردار پیش کیا گیا۔ ان کے اثرورسوخ کے سبب بالسیلز کو "بگ ماما" (Big Mama) کہا جانے لگا۔

بالسیلز نے مصنفین اور ناشرین کے مابین معاہدوں پر نظر ثانی کروائی اور اسے اپنی سب سے بڑی کامیابی قرار دیا۔ بالسیلز نے مصنفین کو زیادہ منصفانہ معاہدے کروائے اور ان معاہدوں پر وقت کی حدیں قائم کیں اور مصنفین کے لئے ترجمے کے حقوق محفوظ رکھے۔

نوبیل انعام یافتہ ماریو ورگاس یوسا بالسیلز کو یاد کرتے ہوئے کہتے ہیں "اس نے ہماری دیکھ بھال کی، اس نے ہمیں خراب کیا، اس نے ہمارے ساتھ جھگڑا کیا، اس نے ہمارے کانوں کو جھنجھوڑا"۔ ورگاس بالسیلز کے متعلق مزید کہتے ہیں "ایک دن جب میں سالانہ پانچ سو ڈالر کی تنخواہ پر لندن میں پڑھا رہا تھا، بالسیلز میرے پاس آئیں اور آتے ہی کہنے لگیں "فورا اپنی کلاسیں چھوڑ دو، تمھیں خود کو خصوصی طور پر تحریر کے لئے وقف کرنا ہوگا۔" یوسا کہتے ہیں میں نے اپنی اہلیہ اور بچوں کا تذکرہ کیا، لیکن بالسیلز نے ایک نہ سنی اور کہنے لگیں کہ پیسوں کی فکر کیئے بغیر "لندن سے نکلو اور بارسلونا چلے جاو اور لکھو"۔

یوسا نے ایک اور جگہ کہا، "ہو سکتا ہے وہ ایک لمحے آپ کو کمزور محسوس ہو، لیکن اگلے ہی لمحے میں ناقابل شکست، مہلک اور سنگین ہوسکتی ہے۔" ایک بار بالسیلز نے اپنے بارے میں کہا، "میں ایک خام ہیرا ہوں۔" اس سے آپ بالسیلز کی شخصیت کا بخوبی اندازہ لگا سکتے ہیں۔

2010ء میں ہسپانوی وزارت ثقافت نے ان کی پچاس سال پر محیط ذاتی آرکائیوز کو تیس لاکھ یورو کے عوض خرید لیا۔

2015ء میں کارمین بالسیلز کی وفات پر یوسا نے کہا "کارمین ڈئیرسٹ، سی یو سون"۔
("Carmen dearest, see you soon")

کارمین بالسیلز کا آج 90 واں یوم پیدائش ہے۔

راشد بٹ


بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/2842374255993089

جواب چھوڑیں