جس کا بدن ہے خوشبو جیسا جس کی چال صبا سی ہے یوسف …

جس کا بدن ہے خوشبو جیسا جس کی چال صبا سی ہے
یوسف ظفر

جس کا بدن ہے خوشبو جیسا جس کی چال صبا سی ہے
اس کو دھیان میں لاؤں کیسے وہ سپنوں کا باسی ہے

پھولوں کے گجرے توڑ گئی آکاش پہ شام سلونی شام
وہ راجا خود کیسے ہوں گے جن کی یہ چنچل داسی ہے

کالی بدریا سیپ سیپ تو بوند بوند سے بھر جائے گا
دیکھ یہ بھوری مٹی تو بس میرے خون کی پیاسی ہے

جنگل میلے اور شہروں میں دھرا ہی کیا ہے میرے لیے
جگ جگ جس نے ساتھ دیا ہے وہ تو میری اداسی ہے

لوٹ کے اس نے پھر نہیں دیکھا جس کے لیے ہم جیتے ہیں
دل کا بجھانا اک اندھیر ہے یوں تو بات ذرا سی ہے

چاند نگر سے آنے والی مٹی کنکر رول کے لائے
دھرتی ماں چپ ہے جیسے کچھ سوچ رہی ہو خفا سی ہے

ہر رات اس کی باتیں سن کر تجھ کو نیند آتی ہے ظفرؔ
ہر رات اسی کی باتیں چھیڑیں یہ تو عجب بپتا سی ہے

Whose body is like fragrance, whose trick is like morning.
Yousaf Zafar

Whose body is like fragrance, whose trick is like morning.
Let's take him into mind how he is a resident of dreams

Flowers of flowers broke in the sky, evening and evening.
How will those kings themselves be whose playfulness is like this

Kali Badariya will be filled with a drop of shells
See this brown soil is just thirsty for my blood

What is the work in the jungle, fair and cities for me
The one who has supported me in the world is my sadness

He did not look back for whom we live.
It is a darkness to extinguish the heart, it is a little bit.

The mud that came from Chandnagar brought with pebbles roll.
Mother Earth is silent, as if she is thinking something, she is angry.

Every night listening to his words makes you sleep Zafar
It's a strange thing to talk about him every night.

Translated


جواب چھوڑیں