شب کو مے خوب سی پی ، صبح کو توبہ کر لی رِند کے رِ…

شب کو مے خوب سی پی ، صبح کو توبہ کر لی
رِند کے رِند رہے ، ہاتھ سے جنت نہ گئی

ضامن علی جلال لکھنوی کی برسی
October 20, 1909

مابعد کلاسکی شاعر،دبستان لکھنو اور رام پور کے امتزاجی اسلوب کے نمائندہ شاعر جلال لکھنوئی کی آج برسی ہے.
امیرعلی ہلالؔ ، میرعلی اوسط رشکؔ اور مرزا محمد رضا برقؔ سے مشورہ سخن کیا۔ انقلاب۱۸۵۷ء کے بعد وہ رام پور چلے گئے جہاں وہ نواب یوسف علی خاں اور نواب کلب علی خاں کے دربار سے وابستہ رہے۔ آخر عمر میں سوائےشعروشاعری اور اصلاح سخن کے کوئی مشغلہ نہ تھا۔ حکیم صاحب کو اپنے فن، زبان اور تحقیق پر بڑا ناز تھا۔ چار دیوان کے علاوہ فن عروض، قواعداور تذکیر وتانیث پر کتابیں ان کی یادگار ہیں۔
۲۰؍اکتوبر۱۹۰۹ء کو لکھنؤ میں انتقال ہوا۔
….
شب کو مے خوب سی پی ، صبح کو توبہ کر لی
رِند کے رِند رہے ، ہاتھ سے جنت نہ گئی
….
اک رات دل جلوں کو یہ عیش وصال دے
پھر چاہے آسمان جہنم میں ڈال دے
………
عشق کی چوٹ کا کچھ دل پہ اثر ہو تو سہی
درد کم ہو یا زیادہ ہو مگر ہو تو سہی
……..
جلالؔ عہد جوانی ہے دو گے دل سو بار
ابھی کی توبہ نہیں اعتبار کے قابل
………
جس نے کچھ احساں کیا اک بوجھ سر پر رکھ دیا
سر سے تنکا کیا اتارا سر پہ چھپر رکھ دیا
………
نہ ہو برہم جو بوسہ بے اجازت لے لیا میں نے
چلو جانے دو بیتابی میں ایسا ہو ہی جاتا ہے
……….
نہ خوف آہ بتوں کو نہ ڈر ہے نالوں کا
بڑا کلیجہ ہے ان دل دکھانے والوں کا
………
پہنچے نہ وہاں تک یہ دعا مانگ رہا ہوں
قاصد کو ادھر بھیج کے دھیان آئے ہے کیا کیا
……..
وعدہ کیوں بار بار کرتے ہو
خود کو بے اعتبار کرتے ہو

I drink well at night, repented in the morning
The rind of rind remained, the heaven did not go out of hand

Death anniversary of Zamin Ali Jalal Lucknowi
October 20, 1909

Today is the death anniversary of the poet Jalal Lucknowi, representative of Kalaski poet, Dubistan Lucknow and Rampur's imitative methods.
Ameer Ali Hilal, Mir Ali Averg Rashk and Mirza Muhammad Raza Barq. After the Revolution 1857, he went to Rampur where he was associated with the court of Nawab Yousuf Ali Khan and Nawab Kalb Ali Khan. At the end, except poetry and poetry. Correction was not a hobby of speech. Hakeem Sahib was very proud of his art, language and research. Apart from four Diwan, books on art, Qawaid and Tazkir Watanis are his memorial.
Died on 20 / October 1909 in Lucknow.
….
I drink well at night, repented in the morning
The rind of rind remained, the heaven did not go out of hand
….
Give this luxury to the jealous people for one night
Even if he throws the sky into hell
………
If the injury of love has some effect on the heart
No matter if the pain is less or more, but if it is
……..
Jalalal is the promise of youth, will you give heart hundred times
Repentance is not worth trusting yet.
………
The one who did something good put a burden on his head
I took the straw from my head and put a cover on my head.
………
Don't be disturbed by the kiss I took without permission
Let it go, this happens in the middle of the world.
……….
No fear of idols, no fear of drains
Those who show their hearts have a big heart.
………
I am asking for this prayer till I reach there.
Have you noticed what you did after sending the messenger here
……..
Why do you promise again and again
You trust yourself.

Translated


جواب چھوڑیں