فارسی ناول بوف کور ( اندھا الو ) سے اقتباس جو کچھ…

فارسی ناول بوف کور ( اندھا الو ) سے اقتباس

جو کچھ مجھے یاد ہے، جتنا کچھ ان واقعات میں سے میرے ذہن میں باقی رہ گیا ہے،
میں اسے لکھ دینے کی کوشش کروں گا۔
کوئی نتیجہ نکالنے کے لیے نہیں، صرف سکون پانے کے لیے، اور اس لیے کہ لوگ میرا یقین کریں۔
ویسے میرے لیے اس بات کی کوئی اہمیت نہیں کہ لوگ میرا یقین کرتے ہیں یا نہیں۔
صرف اس سے ڈرتا ہوں کہ کہیں کل خود کو پہچان پانے سے پہلے نہ مر جاؤں۔
زندگی کے تجربوں سے میں نے یہی سمجھا ہے کہ میرے اور دوسروں کے درمیان ایک ہولناک گھاٹی ہے،
اور یہ نتیجہ نکالا ہے کہ جہاں تک ہوسکے خاموش رہوں اور اپنے خیالات کو اپنے ہی تک رکھوں۔۔

اور اب اگر میں نے لکھنے کا ارادہ کیا ہے تو صرف خود کو اپنے سائے پر ظاہر کرنے کے لیے،،،،
وہ سایہ جو دیوار پر جھکا ہوا میرے لکھے ہوئے لفظوں کو بہت بھوک سے نگلتا جاتا ہے، میری یہ کوشش اسی کے لیے ہے، سوچتا ہوں شاید ہم دونوں ایک دوسرے کو زیادہ اچھی طرح جان سکیں،،
کیونکہ جب سے میں نے دوسروں سے رشتہ توڑا ہے،، میں خود کو زیادہ اچھی طرح جاننا چاہتا ہوں۔۔۔

فارسی ناول : بوف کور ( اندھا الو )
The Blind Owl
مصنف : صادق ہدایت
فارسی سے ترجمہ : اجمل کمال صاحب
زیر اہتمام : آج کی کتابیں
سٹی پریس بک شاپ کراچی
City Press Bookshop Karachi.

انتخاب : Peer Zamarud


بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/2924767877753726

جواب چھوڑیں