ہم مدینے سے اللہ کیوں آ گئے قلبِ حیراں کی تسکیں وہ…

ہم مدینے سے اللہ کیوں آ گئے قلبِ حیراں کی تسکیں وہیں رہ گئی
دل وہیں رہ گیا، جاں وہیں رہ گئی، خم اُسی در پہ اپنی جبیں رہ گئی

یاد آتے ہیں ہم کو وہ شام و سحر وہ سکونِ دل و جان و روح و نظر
یہ انہی کا کرم ہے انہی کی عطا، ایک کیفیتِ دل نشیں رہ گئی

اللہ اللہ وہاں کا درود و سلام، اللہ اللہ وہاں کا سجود و قیام
اللہ اللہ وہاں کا وہ کیفِ دوام، وہ صلٰوۃِ سکوں آفریں رہ گئی

جس جگہ سجدہ ریزی کی لذت ملی، جس جگہ ہر قدم ان کی رحمت ملی
جس جگہ نور رہتا ہے شام و سحر، وہ فلک رہ گیا وہ زمیں رہ گئی

پڑھ کے نَصْر مِنَ اللّٰه وَ فَتْح قَرِیْب جب ہوئے ہم رواں سُوئے کُوئے حبیب
برکتیں رحمتیں ساتھ چلنے لگیں، بے بسی زندگی کی یہیں رہ گئی

زندگانی وہیں کاش ہوتی بسر، کاش بہزاد آتے نہ ہم لوٹ کر
اور پوری ہوئی ہر تمنا مگر ، یہ تمنائے قلبِ حزیں رہ گئی

(بہزاد لکھنوی)

المرسل :-: ابوالحسن علی (ندوی)

Why did we come from Madinah to Allah? The comfort of my heart remained there.
The heart remained there, the soul remained there, the body remained submissive at that door.

I remember those evening and dawn, that peace of heart, soul and soul and sight
This is their blessing, their gift, a state of heart remained down.

Allah, Allah, the blessings and peace of there, Allah, the prostration and stay there.
Allah, Allah, the immortality of there, the peace of peace remained.

The place where I got the pleasure of prostration, the place where I got his blessings at every step
The place where light resides in the evening and dawn, that sky remained and that earth remained

After reading the Nasr of Allah and Fatah, when we came near, we went to sleep.
Blessings and blessings started moving along, helplessness of life remained here

I wish I could live my life there, I wish I couldn't come back.
And every wish was fulfilled, but these wishes remained in my heart.

(Bahzad Lucknowi)

Marsal :-: Abul Hasan Ali (Nadvi)

Translated

جواب چھوڑیں