گر بادہ خوری تو با دردمنداں خور یا با صنمِ لالہ ر…

گر بادہ خوری تو با دردمنداں خور
یا با صنمِ لالہ رخ و خنداں خور
بسیار مخور، ورد مکن، فاش مساز
اندک خور و گاہ خور و پہناں خور
خیام

اگر شراب پینی ہے تو عقلمندوں کے ساتھ پی، یا کسی لالہ رخ اور ہنس مکھ معشوق کے ساتھ پی۔۔ بہت مت پی، سب کے سامنے نہ پی، اور شور نہ کر۔۔ تھوڑی تھوڑی پی، کبھی کبھی پی اور چھپ کر پی۔۔۔
بیدار بخت

گر مے پیے ہم شغل بنا صاحبِ ہوش
یا چاند سی صورت کوئی ہنس مکھ، گل پوش
کثرت نہ ہو، علت نہ لگا، فاش نہ پی
تھوڑی سی، کبھی کبھی، چھپا چھپا کر، خاموش
آغا شاعر

پھولوں کے ساتھ ناچ، ستاروں کے ساتھ پی
یا سادگی پسند نگاروں کے ساتھ پی
افزوں نہ پی، خراب نہ ہو، ہوش مت گنوا
تھم تھم کے، چھپ چھپا کے، سہاروں کے ساتھ پی
عدم

•••••
کتاب : خیام رباعیات
تالیف : بیدار بخت
انتخاب و ٹائپنگ : احمد بلال


بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/2972821662948347

جواب چھوڑیں