ہنگامے سے وحشت ہوتی ہے تنہائی میں جی گھبرائے ہے ک…

ہنگامے سے وحشت ہوتی ہے تنہائی میں جی گھبرائے ہے
کیا جانئے کیا کچھ ہوتا ہے جب یاد کسی کی آئے ہے

جن کوچوں میں سُکھ چین گیا جن گلیوں میں بدنام ہوئے
دیوانہ دل ان گلیوں میں رہ رہ کر ٹھوکر کھائے ہے

ساون کی اندھیری راتوں میں کس شوخ کی یادوں کا آنچل
بجلی کی طرح لہرائے ہے بادل کی طرح اُڑ جائے ہے

یادوں کے درپن ٹوٹ گئے نظروں میں کوئی صورت ہی نہیں
لیکن بے چہرہ ماضی سایہ سایہ لہرائے ہے—-!!!!!

کچھ دنیا بھی بیزار ہے اب ہم جیسے وحشت والوں سے
کچھ اپنا دل بھی دنیا کی اس محفل میں گھبرائے ہے

کلیوں کی قبائیں چاک ہوئیں پھولوں کے چہرے زخمی ہیں
اب کے یہ بہاروں کا موسم کیا رنگ نیا دکھلائے ہے

دیوار نہ در ، سنسان کھنڈر ، ایسا اُجڑا یہ دل کا نگر
تنہائی کے ویرانے میں آواز بھی ٹھوکر کھائے ہے

یہ میرا کوئی دم ساز نہ ہو رفعت یہ کوئی ہم راز نہ ہو
جو میرے گیت مری غزلیں میری ہی دُھن میں گائے ہے

(رفعت سروش)

المرسل :-: ابوالحسن علی(ندوی)

Riots are afraid of me, I am afraid of loneliness.
Don't know what happens when you remember someone

The coaches where happiness went to peace, the streets were infamous.
Crazy heart has stumbled by living in these streets

In the dark nights of Sawan, the veil of which vivid memories
Wave like lightning, it flies like a cloud

The doorsteps of memories are broken, there is no face in the eyes.
But the uncontrollable past has waving the shadow —-!!!!!

Some of the world is also bored of the oppressors like us
Some of our heart is also terrified in this gathering of the world

Buds are torn, the faces of flowers are injured.
This spring season has shown a new color.

Wall is not door, deserted ruins, this city of heart is such a desolate
In the desert of loneliness, the voice has also stumbled.

This should not be a secret to me, it should not be a secret
The one who sings my songs, my lyrics, in my own smoke.

(Gone Sarosh)

Marsal :-: Abul Hasan Ali (Nadvi)

Translated

جواب چھوڑیں