IQBAL BANO .Tazad e Jazbaat Poet. Qabil Ajmeri

قابل اجمیری

تضاد جذبات میں یہ نازک مقام آیا تو کیا کرو گے
میں رو رہا ہوں تم ہنس رہے ہو میں مسکرایا تو کیا کرو گے

مجھے تو اس درجہ وقت رخصت سکوں کی تلقین کر رہے ہو
مگر کچھ اپنے لیے بھی سوچا میں یاد آیا تو کیا کرو گے

ابھی تو تنقید ہو رہی ہے مرے مذاق جنوں پہ لیکن
تمہاری زلفوں کی برہمی کا سوال آیا تو کیا کرو گے

تمہارے جلووں کی روشنی میں نظر کی حیرانیاں مسلم
مگر کسی نے نظر کے بدلے جو دل آزمایا تو کیا کرو گے

اتر تو سکتے ہو یار لیکن مآل پر بھی نگاہ کر لو
خدا ناکردہ سکون ساحل نہ راس آیا تو کیا کرو گے

کچھ اپنے دل پر بھی زخم کھاؤ مرے لہو کی بہار کب تک
مجھے سہارا بنانے والو میں لڑکھڑایا تو کیا کرو گے

ابھی تو دامن چھڑا رہے ہو بگڑ کے قابلؔ سے جا رہے ہو
مگر کبھی دل کی دھڑکنوں میں شریک پایا تو کیا کرو گے

Ajmeriable

What will you do if this delicate position comes in contradictive emotions?
I am crying, you are laughing, what will you do if I smile

You are teaching me to leave at this level
But I thought something for myself, what will you do if I remember you?

Right now my jinns are being criticized, but
What will you do if you ask about the bravery of your hair?

In the light of your light, the surprises of eyes, Muslims.
But what will you do if someone tests your heart in exchange of eyes

You can get down, friend, but look at the garland as well.
What will you do if you don't suit the coast of God?

Eat some wounds on your heart, how long will the spring of my blood be?
What will you do if I stabbed those who made me support

Now you're getting rid of me, you're going from being bad.
But what will you do if you ever find a partner in the heartbeat

Translated


جواب چھوڑیں