سوفی کی دنیا از جوسٹین گارڈر اردو آڈیو بک سوفی …

سوفی کی دنیا
از جوسٹین گارڈر
اردو آڈیو بک
سوفی کا ہمیشہ یہی خیال رہا تھا کہ باغ اپنی دنیا آپ ہے۔ جب کبھی وہ انجیل میں باغ عدن کا حوالہ سنتی، اسے اپنا خفیہ ٹھکانہ یاد آجاتا جہاں وہ مزے سے بیٹھی اپنی ننھی منی جنت کا جائزہ لے رہی ہوتی۔دنیا کہاں سے آئی ہے؟ اسے ذرا بھی معلوم نہیں تھا۔ وہ اتنا ضرور جانتی تھی کہ دنیاخلا میں محض چھوٹا سا سیارہ ہے۔ لیکن خلا کہاں سے آیا تھا؟ عین ممکن ہے کہ خلا ہمیشہ سے موجود رہا ہو، اور اگر یہ بات درست ہے، پھر اسے یہ مسئلہ سلجھانے کی ضرورت نہیں رہے گی کہ یہ کہاں سے آیا ہے۔ لیکن سوال یہ ہے : کیا کوئی چیز ہمیشہ سے موجود ہوسکتی ہے۔ لیکن اس کی باطن کی گہرائیوں میں کوئی چیز اس تصور کے خلاف احتجاج کر رہی تھی۔ یقینا ہر اس چیز کی، جو موجود ہے،کوئی نہ کوئی ابتدا ہوگی؟ چنانچہ خلا کسی زمانے میں کسی دوسری چیز سے تخلیق کیا گیا ہوگا۔
لیکن اگر خلا کسی دوسری چیز سے وجود میں آیا ہے، پھر یہ دوسری چیز بھی کسی اور چیز سے بنی ہوگی۔ سوفی کو محسوس ہوا کہ وہ مسئلے کو محض ٹال رہی ہے۔ کسی نہ کسی وقت کوئی نہ کوئی چیز عدم سے وجود میں آئی ہوگی۔ کیا یہ ممکن ہے؟کیا یہ بات اتنی ہی ناممکن نہیں جتنی کہ یہ دنیا ہمیشہ سے موجودہے؟
مکمل تفصیل اس لنک میں


بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/2981275988769581

جواب چھوڑیں