حیدر دہلوی کا یومِ پیدائش Jan 17, 1906 آج معروف …

حیدر دہلوی کا یومِ پیدائش
Jan 17, 1906
آج معروف شاعر خیام الہند حیدر دہلوی کا یومِ پیدائش ہے۔
حیدر دہلوی کا اصل نام سید جلال الدین حیدر تھا اور وہ 17 جنوری 1906ء کو دہلی میں پیدا ہوئے تھے نو سال کی عمر میں انہوں نے شاعری کا آغاز کیا اور 13 برس کی عمر میں مشاعروں میں شرکت کرنے لگے۔ وہ شاعروں کی اس نسل سے تعلق رکھتے تھے جو داغ و مجروح کی تربیت یافتہ نسل تھی۔ خمریات کے موضوعات کی مضمون بندی میں انہیں کمال حاصل تھا اسی لیے ارباب ہنر نے انہیں خیام الہند کے خطاب سے نوازا تھا۔
آزادی کے بعد حیدر دہلوی‘ پاکستان آگئے پہلے انہوں نے ڈھاکا میں قیام کیا پھر کراچی میں اقامت اختیار کی اور بالآخر یہیں پیوند خاک ہوئے۔
حیدر دہلوی کے چند اشعار ملاحظہ ہوں:

چمن والوں سے مجھ صحرا نشیں کی بودو باش اچھی
بہار آکر چلی جاتی ہے ویرانی نہیں جاتی
……٭٭٭……
اب سے نہیں اول سے ہوں مشتاق نظارہ
آنکھوں سے نہیں نیند مقدر سے اڑی ہے
……٭٭٭……
عشق کی چوٹ تو پڑتی ہے دلوں پر یک سر
ظرف کے فرق سے آواز بدل جاتی ہے

10 نومبر 1958ء کو اردو کے معروف شاعر حیدر دہلوی کراچی میں انتقال کرگئے تھے۔
حیدر دہلوی کا مجموعہ کلام ان کی وفات کے بعد صبح الہام کے نام سے شائع ہوا تھا وہ کراچی میں پی ای سی ایچ سوسائٹی کے قبرستان میں آسودہ خاک ہیں

Birthday of Haider Dehlvi
Jan 17, 1906
Today is the birthday of famous poet Khayyam-ul-Hind Haider Dehlvi.
Haider Dehlvi's original name was Syed Jalaluddin Haider and he was born on 17 January 1906 in Delhi. At the age of nine, he started poetry and started participating in poets at the age of 13 He belonged to the generation of poets who were trained by stains and vulnerable. He had perfection in essaying the topics of Khmariat that is why Arbab Skinr was awarded him with the address of Khayyam-ul-Hind.
After Independence, Haider Dehlvi came to Pakistan. First he stayed in Dhaka, then took place in Karachi and finally he became dust here.
See some poems of Haider Dehlvi:

I am better than the people of the garden in the desert.
Spring comes and goes away, loneliness does not go away
……٭٭٭……
Not from now on, I am from the first, Mushtaq view
Sleep is not with eyes but with fate.
……٭٭٭……
Love hurts the hearts one head
Voice changes with the difference of capacity.

On November 10, 1958, Urdu poet Haider Dehlvi died in Karachi.
Haider Dehlvi's collection of kalam was published after his death in the name of Sabh Alham. He is a rich dust in the graveyard of PECH Society in Karachi.

Translated


جواب چھوڑیں