ناول ۔ سرخ میرا نام مصنف۔ اورہان پامک میں اب ایک…

ناول ۔ سرخ میرا نام
مصنف۔ اورہان پامک

میں اب ایک لاش کے سوا کُچھ نہیں ،کنویں کی تہہ میں پڑا اک مردہ وجود۔۔۔۔۔ چلر ایہان کے دربدر سے ترکی میں بھٹکے شفک کے مارے یشار کمال کو دیوتا مان کر گھٹنے ٹیک کر ایک کنویںMore میں جھانکنے کی جسارت کریں تو ایک کہانی کی کسک اٹھتی ہے اور سولہویں صدی کے منی ایچر فنکار کی لاش آپ سے بولنا شروع کر دیتی ہے ۔ یہ 1591 ٕ میں سلطان مُرات کی فلسفیانہ پیچیدیگیوں کا زمانہ ہے جو منی ایچر فنکار جب عمر بھر گذارتے اور انہیں اپنی مصوری سے نکلنا پڑھتا تو وہ خود کو اندھا کر لیتے۔ یہ کہانی 1998 میں پامک نے لکھی ہے جو کنویں میں گری لاش خود شروع کرتی ھے ۔ اسکا ترجمہ 60 سے زاٸد زبانوں میں ھو چکا ھے۔ کہانی کا ہر باب اک تحیر ھے اور جدا کینوس کا استعارہ سا معلوم ھوتا ھے۔ جب پامک کے اندر… More

No photo description available.
بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/2986507201579793

جواب چھوڑیں