The Road Not Taken BY Robert Frost Translation:…

The Road Not Taken
BY Robert Frost
Translation: Omer Aziz

زرد جنگل کے سفر میں ایک دوراہا ملا
وائے حسرت دونوں رستوں پر تو جا سکتا نہ تھا
سو تنِ تنہا کھڑا اک رہنما کی آس میں
اک مسافر کی طرح تا دیر میں تکتا رہا
More راستہ جو سامنے پھیلا تھا تا حدِّ نظر
سبز بیلوں، جھاڑیوں کی اوٹ میی چھپتا ہوا
منتخب دوجا کیا میں نے جو تھا ویسا حسیں
اور شائد مجھ پہ اس کا حق بھی کچھ افزوں ہی تھا
کیونکہ اس کے سبزہ و گل کو تھی رہرو کی طلب
گرچہ دونوں ہی تھے اک جیسے حسین و دلربا
تھے بنے سنورے ہوئے دونوں ہی میرے سامنے
صبحدم دونوں پہ ہی کوئی ابھی تھا کب گیا
آہ میں نے "پھر کبھی” کہہ کر تھا چھوڑا ایک کو
ایک دن جاؤں گا اس پر دل میں یہ سوچا بھی تھا
جانتا تھا ہیں نکلتے راستوں سے راستے
اور یہ بھی جانتا تھا شاذ ہی میں آؤں گا
ایک لمبی آہ بھر کے سانس لے کے سرد سا
مدتوں کے بعد اک دن میں بھی یہ بتلاؤں گا
ایک دوراہا ملا تھا ایک جنگل میں مجھے
اور میں نے وہ چنا جس پر کوئی جاتا نہ تھا
جس پہ کم کم ہی نکلتے ہوں سفر کو راہرو
فرق جیسا بھی پڑا وہ راہ چننے سے پڑا

ترجمہ: عمر عزیز

May be an image of text that says 'Two roads diverged in a wood, and I-I took the one less traveled by, and that has made all the difference. -Robert Frost, The Road Not Taken'
بشکریہ
https://www.facebook.com/groups/1876886402541884/permalink/3013597378870775

جواب چھوڑیں