( غیر مطبوعہ ) وہ ہم قدم ۔۔ ہم خیـــال کب تھا کہ …

( غیر مطبوعہ )

وہ ہم قدم ۔۔ ہم خیـــال کب تھا کہ چلتے رہتے
جو ربط تھا ‘وہ بحال کب تھا کہ چلتے رہتے

براے نظّـــــــــــارگی ســــــتارہ مِـــژہ پر آتا
لہــو ٹپکنا کمــــــــال کب تھا کہ چلتے رہتے

سِپُردگی زخم کھا کے قربت میں رہ گئی تھی
یہ زخم’ زخمِ وصال کب تھا کہ چلتے رہتے

More

جواب چھوڑیں