( غیر مطبوعہ ) سرمہ سا تجھے آنکھ میں رکھا ہی کریں…

( غیر مطبوعہ )

سرمہ سا تجھے آنکھ میں رکھا ہی کریں گے
پھر آنکھ زمانے سے چُـــــرایا ہی کریں گے

ہم ســــــاعتِ آئندہ میں زندہ بھی رہے گر
اس ساعت موجود کا شکوہ ہی کریں گے

کچھ روز گزاریں گے سرِ دشتِ طلب اور
کچھ روز ترے عشق کا چرچا ہی کریں گے

More


جواب چھوڑیں