ہجر میں گزری ہے اس رات کی باتیں نہ کرو آپ تجدید…

ہجر میں گزری ہے اس رات کی باتیں نہ کرو
آپ تجدیدِ ملاقات کی باتیں نہ کرو

دل نے ہر دور میں دنیا سے بغاوت کی ہے
دل سے تم رسم و روایات کی باتیں نہ کرو

ہمتیں قافلے والوں کی نہ ہوں پست کہیں
رہروِ گردشِ حالات کی باتیں نہ کرو

چاہیے جوشِ طلب میرے شکستہ دل کو…

More

May be an image of 1 person

جواب چھوڑیں