سودا کی اپنی ہی غزل پر تضمین کرے جو ظلم و ستم کرن…

سودا کی اپنی ہی غزل پر تضمین
کرے جو ظلم و ستم کرنے دو، ہوا سو ہوا
جفا و ظلم سے مت ڈرو، ہوا سو ہوا
یہ میرے غم کی نہ شہرت کرو، ہوا سو ہوا
“جو گزری مجھ پہ مت اُس سے کہو، ہوا سو ہوا
بلاکشانِ محبت پہ جو، ہوا سو ہوا”

اگرچہ روزِ ازل سے تھی میری یہ تقدیر
کہ دامِ عشق میں اپنے کرے مجھے تو اسیر
کرے جو ذبح تو…

More

May be an image of 1 person and text that says 'Mirza Muhammad Rafi Sauda'

جواب چھوڑیں