سرفروشی کی تمنا اب ہمارے دل میں ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔…

سرفروشی کی تمنا اب ہمارے دل میں ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
بسملؔ عظیم آبادی
سرفروشی کی تمنا اب ہمارے دل میں ہے
دیکھنا ہے زور کتنا بازوئے قاتل میں ہے
اے شہید ملک و ملت میں ترے اوپر نثار
لے تری ہمت کا چرچا غیر کی محفل میں ہے
وائے قسمت پاؤں کی اے ضعف کچھ چلتی نہیں
کارواں اپنا ابھی تک پہلی ہی منزل…

More

May be an image of 2 people and text

جواب چھوڑیں