ملو جو ہم سے تومل لو کہ ہم بہ نوکِ گیاہ مثالِ قطر…

ملو جو ہم سے تومل لو کہ ہم بہ نوکِ گیاہ
مثالِ قطرۂ شبنم رہے رہے نہ رہے
(نظیر اکبر آبادی)

جواب چھوڑیں