سالانہ آرکائیو

2019

مَیں ‌تیرے سَنگ کیسے چلُوں سجنا تُو سَمَندر ہے مَی…

مَیں ‌تیرے سَنگ کیسے چلُوں سجنا تُو سَمَندر ہے مَیں ساحِلوں کی ہَوا تُو میرا ہاتھ ہاتھوں میں لے کے چَلے مِہربانی تیری تیری آہٹ سے دِل کا دَرِیچہ کُھلے مَیں دِیوانی تیری تُوغبارِ سَفَر مَیں خِزاں کی صدا تُو سَمَندر ہے مَیں ساحِلوں کی ہَوا…

تشبیہات اور استعارے بتا دیتے ھیں کہ شاعر کوئی اور …

تشبیہات اور استعارے بتا دیتے ھیں کہ شاعر کوئی اور نہیں سِوائے ”گلزار“ کے۔ کیا کمال کلام ھے۔ اُتنی ھی خوبصُورتی سے اِسے ”الکا ياگنک“ نے گا کر اَمر کر دیا۔ آپ سب دوستوں کی بصَارتوں کی نذر۔ آنکھوں میں ساون چَھلکا ھُوا ھے آنسُو ھے کوئی اٹکا…

اسلام میں شاعری کی حیثیت اور متعلقات شعر پر ایک تح…

اسلام میں شاعری کی حیثیت اور متعلقات شعر پر ایک تحقیقی نظر حصہ سوم یعنی شعراء میں سے وہ لوگ جو صاحب ایمان بھی ہیں اور اعمالِ صالحہ بھی کرتے ہیں وہ اس وعید کی زد میں نہیں، بلکہ وہ لوگ تو وذکروا اللہ کثیرا کی شان والے ہیں، جس کی تفسیر…

میری کشور کمار کے اِس گانے کے ساتھ بہت سی یادیں جُ…

میری کشور کمار کے اِس گانے کے ساتھ بہت سی یادیں جُڑی ھیں۔ جب بھی سنوں پچیس سال پیچھے لے جاتی ھیں اور کالج دَور کا کیا کیا یاد آنے لگتا ھے۔ آنند بخشی کی خوبصُورت رَچنا اور آر ڈی برمن کی لا جواب کمپُوزیشن۔ میرے نیناں ساون بھادوں پھر…

ایک بات زندگی بھر یاد رکھنا. اور وہ یہ کہ کسی کو د…

ایک بات زندگی بھر یاد رکھنا. اور وہ یہ کہ کسی کو دھوکا دینا اپنے آپ کو دھوکا دینے کے مترادف ھے۔ دھوکے میں بڑی جان ھوتی ھے وہ مرتا نہیں ھے۔ گھوم پِھر کر ایک روز واپس آپ کے پاس ھی پہنچ جاتا ھے. کیونکہ اِس کو اپنے ٹھکانے سے بڑی محبت ھوتی ھے…

شفق سے دور، ستاروں کی شاہراہ سے دور اُداس ہونٹوں …

شفق سے دور، ستاروں کی شاہراہ سے دور اُداس ہونٹوں پہ جلتے سُلگتے سِینے سے تمھارا نام کبھی اِس طرح اُبھرتا ہے فضا میں جیسے فرشتوں کے نرم پَر کُھل جائیں دِلوں سے جَیسے پُرانی کدُورتیں دُھل جائیں یہ بولتی ہُوئی شب، یہ مُہِیب سناٹا کہ جیسے…

پروفیسر محمد آفاق صدیقی کا یوم وفات June 17/18, 20…

پروفیسر محمد آفاق صدیقی کا یوم وفات June 17/18, 2012 پیدائش: 4 مئی 1928 ء ۔۔ فرخ آباد ، اتر پردیش، برطانوی ہندوستان وفات: 17 جون 2012 ء ۔۔ کراچی ، پاکستان آفاق صدیقی کی مادری زبان اگرچہ اردو تھی لیکن انہیں فارسی، ہندی اور سندھی پر بھی…

کچھ محتسبوں کی خلوت میں، کچھ واعظ کے گھر جاتی ہے ہ…

کچھ محتسبوں کی خلوت میں، کچھ واعظ کے گھر جاتی ہے ہم بادہ کشوں کے حصے کی، اب جام میں کمتر آتی ہے یوں عرض و طلب سے کب اے دل، پتھر دل پانی ہوتے ہیں تم لاکھ رضا کی خُو ڈالو، کب خوئے ستمگر جاتی ہے بیداد گروں کی بستی ہے یاں داد کہاں خیرات…

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…