ڈیلی آرکائیو

2019-01-05

اپنی جاں نذر کروں اپنی وفا پیش کروں قوم کے مرد مجا…

اپنی جاں نذر کروں اپنی وفا پیش کروں قوم کے مرد مجاہد تجھے کیا پیش کروں تو نے دشمن کو جلا ڈالا ہے شعلہ بن کے ابھرا ہرگام پہ فتح کا نعرہ بن کے اس شجاعت کا کیا میں تجھے صلہ پیش کروں اپنی جاں نذر کروں اپنی وفا پیش کروں قوم کے مرد مجاہد تجھے…

امیر مینائی کے شاگرد۔ داغ دہلوی کے بعد حیدرآباد ک…

امیر مینائی کے شاگرد۔ داغ دہلوی کے بعد حیدرآباد کے ملک الشعراء جلیل مانک پوری آپ چھو دیکھیں کسی غنچے کو اپنے ہاتھ سے غنچہ گل ہو جائے گا اور گل چمن ہو جائے گا ..... آیا نہ پھر کے ایک بھی کوچے سے یار کے قاصد گیا نسیم گئی نامہ بر گیا .....…

چشمِ باطن کو بروئے کار جب لاتا ہوں میں وہ کہیں…

چشمِ باطن کو بروئے کار جب لاتا ہوں میں وہ کہیں بھی ہوں،نظر کے سامنے پاتا ہوں میں اس لیے ہر ظلم خاموشی سے سہ جاتا ہوں میں یہ نہ سمجھیں وہ کہ ان کے غم سے گھبراتا ہوں میں فکرِ دنیا ہو، غمِ عقبیٰ ہو، دردِ عشق ہو غم کا ہر…

شہر کو تیری جُستجُو ہے بہت ان دنوں ہم پہ گفتگو ہے…

شہر کو تیری جُستجُو ہے بہت ان دنوں ہم پہ گفتگو ہے بہت جب سے پرواز کے شریک ملے گھر بنانے کی آرزُو ہے بہت درد رہ رہ کے سر اُٹھاتا ہے کبھو کم ہو گیا، کبھو ہے بہت کچھ تو وہ یاد بھی بہت آیا کچھ اِن آنکھوں میں بھی…

منزلیں ایک سی آوارگیاں ایک سی ہیں مختلف …

منزلیں ایک سی آوارگیاں ایک سی ہیں مختلف ہو کے بھی سب زندگیاں ایک سی ہیں کوئی قاصد ہو کہ ناصح، کوئی عاشق کہ عدو سب کی اُس شوخ سے وابستگیاں ایک سی ہیں دشتِ مجنوں میں نہ سہی تیشۂ فرہاد سہی سفرِ عشق میں واماندگیاں ایک سی…

” ایک خواب اور ” خواب اب حُسنِ تصوّر کے افق سے ہی…

" ایک خواب اور " خواب اب حُسنِ تصوّر کے افق سے ہیں پرے دل کے اک جذبۂ معصوم نے دیکھے تھے جو خواب اور تعبیروں کے تپتے ہوئے صحراؤں میں تشنگی آبلہ پا، شعلہ بکف موجِ سراب یہ تو ممکن نہیں بچپن کا کوئی دن مل جائے یا پلٹ آئے کوئی ساعتِ نایابِ…

میں تو۔مجبور سہی ﷲ تو مجبور نہیں تجھ سے میں دور سہ…

میں تو۔مجبور سہی ﷲ تو مجبور نہیں تجھ سے میں دور سہی وہ تو مگر دور نہیں تیری صحت ہمیں منظور ہے لیکن اس کو نہیں منظور تو پھر ہم کو بھی منظور نہیں مولانا محمد علی جوہر .... قید کے دوران ان کی بیٹی آمنہ اس طور پر علیل ہوگئیں کہ زندگی کی…

تیری یادوں سے دل فروزاں کریں گے پھر اس غم کدے میں …

تیری یادوں سے دل فروزاں کریں گے پھر اس غم کدے میں چراغاں کریں گے ذرا حضرت دل کی جرأت تو دیکھو یہ نظارہ حُسن جاناں کریں گے زمانہ جو آتش فشاں ہے تو کیا غم ہم آتش کدے کو گلستاں کریں گے چلے تو ذرا دور جامِ محبت فرشتے بھی…

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…