ڈیلی آرکائیو

2019-01-12

جب ملاقات بے ارادہ تھی اس میں آسودگی زیادہ تھی …

جب ملاقات بے ارادہ تھی اس میں آسودگی زیادہ تھی نہ توقع نہ انتظار نہ رنج صبحِ ہجراں نہ شامِ وعدہ تھی نہ تکلف نہ احتیاط نہ زعم دوستی کی زبان سادہ تھی جب بھی چاہا کہ گنگناؤں اُسے شاعری پیش پا فتادہ تھی لعل سے لب چراغ…

شہناز سَحرؔ معبوُد تُجھ سے ایک جَبِیں چاہیے مجھے …

شہناز سَحرؔ معبوُد تُجھ سے ایک جَبِیں چاہیے مجھے پھر اُس کے بعد کُچھ بھی نہیں چاہیے مجھے تیرے جہاں پہ اپنا جہاں کیوں میں وار دُوں کوئی بہشت ہے، تو یہیں چاہیے مجھے پرواز کیا کرُوں کسی بنجر فلک پہ مَیں اُڑنے کے واسطے بھی، زَمِیں…

یہ عالم شوق کا، دیکھا نہ جائے وہ بت ہے یا خدا، دیک…

یہ عالم شوق کا، دیکھا نہ جائے وہ بت ہے یا خدا، دیکھا نہ جائے! یہ میرے ساتھ کیسی روشنی ہے کہ مجھ سے راستہ، دیکھا نہ جائے! یہ کن نظروں سے تُوں نے آج دیکھا کہ تیرا دیکھنا، دیکھا نہ جائے! ہمیشہ کے لیے مجھ سے بچھڑ جا یہ منظر بارہا، دیکھا نہ…

ﻟﮕﺘﺎ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺍﺏ ﭼﺎﮨﺘﯿﮟ ﺁﺳﺎﮞ ﮨﯿﮟ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﻋُﺸﺎﻕ ﮨﯿﮟ ﮐﻢ ،…

ﻟﮕﺘﺎ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺍﺏ ﭼﺎﮨﺘﯿﮟ ﺁﺳﺎﮞ ﮨﯿﮟ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﻋُﺸﺎﻕ ﮨﯿﮟ ﮐﻢ ، ﭼﺎﮎ ﮔﺮﯾﺒﺎﮞ ﮨﯿﮟ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺍﮎ ﺁﺩﮪ ﮐﻮﺋﯽ ﺻﺎﺣﺐِ ﺩﻝ ﺑﮭﯽ ﮨﮯ ﻓﺮﻭﮐﺶ ﺍﺏ ﮐﻮچہءِ ﺩﻟﺪﺍﺭ ﻣﯿﮟ ﺩﺭﺑﺎﮞ ﮨﯿﮟ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﻣﺪﺕ ﺳﮯ ﮐﻮﺋﯽ ﺟﺎﻧﺐِ ﻣﻘﺘﻞ ﻧﮩﯿﮟ ﺁﯾﺎ ﻗﺎﺗﻞ ﺑﮭﯽ ﺗﻮﻗﻊ ﺳﮯ ﭘﺸﯿﻤﺎﮞ ﮨﯿﮟ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﺟﺲ ﺗﺎﺝ ﮐﻮ ﺩﯾﮑﮭﻮ…

انشاء اللہ خان انشاء – شیخ غلام علی ہمدانی مصحفی -…

انشاء اللہ خان انشاء - شیخ غلام علی ہمدانی مصحفی - نظیر اکبرآبادی ..... نظیر اکبرآبادی اگر ہے منظور یہ کہ ہووے ہمارے سینے کا داغ ٹھنڈا تو آ لپٹئے گلے سے اے جاں جھمک سے کر جھپ چراغ ٹھنڈا ہم اور تم جاں اب اس قدر تو محبتوں میں ہیں ایک تن…

پاکستان سوشل سینٹر شارجہ کی ادبی کمیٹی کا سال نو مشاعرہ کرانے کا اعلان

کمیٹی شارجہ اور شمالی امارات میں ادبی خلا پر کرے گی ، سلیمان جاذب باصلاحیت افراد کو سامنے لایا جائے گا، راجہ خیال الحق، مزید خواتین کو مشن میں شامل کیا جائے گا، فرح شاہد پاکستان سوشل سینٹر شارجہ کی نوتشکیل شدہ ادبی کمیٹی کا پہلا باضابطہ

سُنا ہے لوگ اُسے آنکھ بھر کے دیکھتے ہیں سو اُس کے …

سُنا ہے لوگ اُسے آنکھ بھر کے دیکھتے ہیں سو اُس کے شہر میں کچھ دن ٹھہر کے دیکھتے ہیں سُنا ہے بولے تو باتوں سے پھول جھڑتے ہیں یہ بات ہے تو چلو بات کر کے دیکھتے ہیں سُنا ہے ربط ھے اُس کو خراب حالوں سے سو اپنے آپ کو برباد کر کے دیکھتے ہیں…

رنجش ہی سہی دل ہی دکھانے کے لیے آ احمد فراز رنجش ہ…

رنجش ہی سہی دل ہی دکھانے کے لیے آ احمد فراز رنجش ہی سہی دل ہی دکھانے کے لیے آ آ پھر سے مجھے چھوڑ کے جانے کے لیے آ کچھ تو مرے پندار محبت کا بھرم رکھ تو بھی تو کبھی مجھ کو منانے کے لیے آ پہلے سے مراسم نہ سہی پھر بھی کبھی تو رسم و رہ…

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…