ڈیلی آرکائیو

2019-02-17

بِکھر جائیں گے ہم کیا جب تماشا ختم ہوگا مرے معبو…

بِکھر جائیں گے ہم کیا جب تماشا ختم ہوگا مرے معبود! آخر کب تماشا ختم ہوگا چراغِ حجرۂ درویش کی بجھتی ہوئی لَو ہوا سے کہہ گئی ہے اب تماشا ختم ہوگا کہانی میں نئے کردار شامل ہو گئے ہیں نہیں معلوم اب کس ڈھب تماشا ختم ہوگا…

جب بھی لائی گردشِ ایّام تیرے شہر میں ہم پر آیا …

جب بھی لائی گردشِ ایّام تیرے شہر میں ہم پر آیا اِک نیا الزام تیرے شہر میں اِک ذرا سی بات کیا پھیلی کہ افسانہ بنی ہو گئے ہم مُفت میں بدنام تیرے شہر میں غیر تو پھر غیر ہیں اپنے بھی ناصح بن گئے جب لیا بُھولے سے تیرا نام تیرے شہر…

رَختِ شَب سجے ہوئے شہر کے مکینو! مجھے نہ دیکھو! …

🍁🍁رَختِ شَب🍁🍁 سجے ہوئے شہر کے مکینو! مجھے نہ دیکھو! میں بے زماں بے مکاں کا اُداسی کے کھردرے ہاتھ سے تراشیدہ "سنگ زادہ " میرے بدن پر قبائے سادہ مسافتوں سے اَٹا لِبادہ، میں خواہشوں کے ہجوم میں بھی خود اپنے خوابوں کا آدمی ہوں میں کتنی…

سفر میں ہیں مسلسل ہم کہیں آباد بھی ہونگے ہوئے نا…

سفر میں ہیں مسلسل ہم کہیں آباد بھی ہونگے ہوئے ناشاد جو اتنے تو ہم دل شاد بھی ہونگے زمانے کو برا کہتے نہیں ہم ہی زمانہ ہیں کہ ہم جو صید لگتے ہیں ہمیں صیاد بھی ہونگے بُھلا بیٹھے ہیں وہ ہر بات اس گذرے زمانے کی مگر قصّے اُس…

*آج – 16 / فروری / 1936* *اردو نظم کے موجودہ شعرا…

*آج - 16 / فروری / 1936* *اردو نظم کے موجودہ شعراء میں بلا مبالغہ سب سے بڑے شاعر” آفتاب اقبال شمیمؔ صاحب “ کا یومِ ولادت...* *آفتاب اقبال شمیمؔ*، *جہلم* میں *١٦ فروری ۱۹۳۶ء* میں پیدا ہوئے اور تمام عمر تدریس کے شعبے سے وابستہ رہے۔ دورانِ…

جب رات کی تنہائی ، دل بن کے دھڑکتی ھے یادوں کے دری…

جب رات کی تنہائی ، دل بن کے دھڑکتی ھے یادوں کے دریچوں میں ، چلمن سی سرکتی ھے لوبان میں چنگاری جیسے کوئی رکھ جائے یوں یاد تیری شب بھر ، سینے میں سُلگتی ھے یُوں پیار نہیں چھپتا ، پلکوں کے جھکانے سے آنکھوں کے لفافوں ، میں تحریر چمکتی ھے…

کیوں کسی رہرو سے پوچھوں اپنی منزل کا پتا آرزو لکھن…

کیوں کسی رہرو سے پوچھوں اپنی منزل کا پتا آرزو لکھنوی کیوں کسی رہرو سے پوچھوں اپنی منزل کا پتا موج دریا خود لگا لیتی ہے ساحل کا پتا ہے نشان لیلیٰ مقصود محمل کا پتا دل ربا ہاتھ آ گیا پایا جہاں دل کا پتا راہ الفت میں سمجھ لو دل کو…

دردِ دل میں کمی نہ ھو جائے دوستی , دشمنی نہ ھو جائ…

دردِ دل میں کمی نہ ھو جائے دوستی , دشمنی نہ ھو جائے اپنی خُوئے وفا سے ڈرتا ھُوں عاشقی ، بندگی نہ ھو جائے تُم میری دوستی کا دَم نہ بھرو آسماں مُدعی نہ ھو جائے طالع بد وھاں بھی ساتھ نہ دے موت بھی زندگی نہ ھو جائے بیٹھتا ھے ھمیشہ…

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…