ڈیلی آرکائیو

2019-06-05

شاید کُچھ آگے آگئے کُوئے بُتاں سے ہم اب یاد کر رہے…

شاید کُچھ آگے آگئے کُوئے بُتاں سے ہم اب یاد کر رہے ہیں کہ، بھٹکے کہاں سے ہم؟ . نِکلے تھے جانے کیسی گھڑی گُلسِتاں سے ہم ایسے چُھٹے، کہ پھر نہ مِلے آشیاں سے ہم . رُودادِ حُسن و عِشق سُنائیں کہاں سے ہم شرمائیں گے حضُور، کہیں گے جہاں سے ہم .…

پھر روگوں میں چھوڑ گئے ہو کن لوگوں میں چھوڑ گئے ہو…

پھر روگوں میں چھوڑ گئے ہو کن لوگوں میں چھوڑ گئے ہو ہنستے ہنستے جانے والے کیوں سوگوں میں چھوڑ گئے ہو؟ ہم کو دردوں اور دُکھوں کے سنجوگوں میں چھوڑ گئے ہو یہ زخموں پر ہنس دیتے ہیں اِن لوگوں میں چھوڑ گئے ہو ؟ دیکھو مجھ کو روند رہے ہیں جن…

دھڑکتے، سانس لیتے، رُکتے چلتے میں نے دیکھا ہے کوئی…

دھڑکتے، سانس لیتے، رُکتے چلتے میں نے دیکھا ہے کوئی تو ہے جسے اپنے میں پلتے میں نے دیکھا ہے تمہارے خون سے میری رگوں میں خواب روشن ہے تمہاری عادتوں میں خود کو ڈھلتے میں نے دیکھا ہے نہ جانے کون ہے جو خواب میں آواز دیتا ہے؟ خود اپنے…