ڈیلی آرکائیو

2019-06-14

کل چودھویں کی رات تھی، شب بھر رہا چرچا تیرا کچھ نے…

کل چودھویں کی رات تھی، شب بھر رہا چرچا تیرا کچھ نے کہا یہ چاند ہے، کچھ نے کہا چہرا تیرا ہم بھی وہیں موجود تھے، ہم سے بھی سب پُوچھا کیے ہم ہنس دیئے، ہم چُپ رہے، منظور تھا پردہ تیرا اس شہر میں کِس سے مِلیں، ہم سے تو چُھوٹیں محفلیں ہر شخص…

ثاقبؔ لکھنوی کہاں تک جَفا حُسن والوں کی سہتے جوا…

ثاقبؔ لکھنوی کہاں تک جَفا حُسن والوں کی سہتے جوانی جو رہتی، تو پِھر ہم نہ رہتے وَفا بھی نہ ہوتا، تو اچّھا تھا وعدہ گھڑی دو گھڑی تو، کبھی شاد رہتے نشیمن نہ جلتا، نشانی تو رہتی ہمارا تھا کیا ٹھیک، رہتے نہ رہتے زمانہ بڑے شَوق سے سُن…

بیخوؔد دہلوی حضرتِ دِل! یہ عِشق ہے، درد سے کسمسائ…

بیخوؔد دہلوی حضرتِ دِل! یہ عِشق ہے، درد سے کسمسائے کیوں موت ابھی سے آئے کیوں، جان ابھی سے جائے کیوں عِشق کا رُتبہ ہے بڑا، عِشق خُدا سے جا مِلا آپ نے کیا سمجھ لِیا، آپ یہ مُسکرائے کیوں میرا غلط گِلہ سہی، ظُلم و جَفا رَوا سہی نازِ سِتَم…

آئیے ایک محفل میں حضرتِ اَمیر مینائی کی غزل جگجیت …

آئیے ایک محفل میں حضرتِ اَمیر مینائی کی غزل جگجیت سنگھ سے ھلکے پُھلکے انداز میں سُنتے ھیں۔ جگجیت کا حسِ مزاح کمال تھا اور ھر لائیو پروگرام میں لطیفے ضُرور سناتے تھے۔ سَرکتی جائے ھے رُخ سے نقاب ،آھستہ آھستہ نکلتا آ رھا ھے آفتاب ، آھستہ…

عمرِ طویل دے کے نہ مجھ کو خراب کر دو چار جھومتے ہ…

عمرِ طویل دے کے نہ مجھ کو خراب کر دو چار جھومتے ہوے لیل و نہار دے اک وعدہ اور کر کے طبیعت پھڑک اٹھے اک تیر اور میرے کلیجے میں مار دے دنیا نے بے شمار عدم کو دئیے ہیں رنج اے دوست چیز تو بھی کوئی یادگار دے ..... عبدالحمید عدم

ناآشنائے درد نہیں بے وفا نہیں رفعت سلطان ناآشنائے…

ناآشنائے درد نہیں بے وفا نہیں رفعت سلطان ناآشنائے درد نہیں بے وفا نہیں اک آشنا کہ ہائے مرا آشنا نہیں لاؤں جو دل کی بات زباں پر تو کس لیے میں جانتا نہیں ہوں کہ تو جانتا نہیں جلتا رہا ہوں زیست کے دوزخ میں عمر بھر یہ اور بات ہے مری…

Hey there!

Forgot password?

Don't have an account? Register

Forgot your password?

Enter your account data and we will send you a link to reset your password.

Your password reset link appears to be invalid or expired.

Close
of

Processing files…