ماہانہ آرکائیو

اپریل 2020

شفیق خلؔش . ہم لوگ دُھوپ میں نہ کبھی سر کُھلے رہ…

شفیق خلؔش . ہم لوگ دُھوپ میں نہ کبھی سر کُھلے رہے سائے میں غم کی آگ کے اکثر دبے رہے فُرقت کے روز و شب بڑے ہم پر کڑے رہے ہم بھی اُمیدِ وصل کے بَل پر اڑے رہے دِل اِنتظار سے تِری غافِل نہیں رہا گھر کے کواڑ تھے کہ جو شب بھر کُھلے رہے راتوں نے…

Zindagi aye Zindagi – Majeed Amjad

" زندگی ، اے زندگی " خرقہ پوش و پا بہ گِل میں کھڑا ہوں ، تیرے در پر ، زندگی ملتجی و مضمحل خرقہ پوش و پابہ گل اے جہانِ خار و خس کی روشنی زندگی ، اے زندگی میں ترے در پر چمکتی چلمنوں کی اوٹ سے سن رہا ہوں قہقہوں کے دھیمے دھیمے زمزمے…

کبھی وہ رُو برو آیا تو ہوتا کوئی یاں تک اسے لایا …

کبھی وہ رُو برو آیا تو ہوتا کوئی یاں تک اسے لایا تو ہوتا نہ اٹھتے پھر تو نقشِ پا کی صورت وہاں قسمت نے پہنچایا تو ہوتا وہ مانے یا نہ مانے تجھ سے ہمدم ولیکن اس کو سمجھایا تو ہوتا (بہرام جی جاما سپ جی دستور)

واہمہ ہے واہمہ ہے یہ سمندر شام ساحل کی طرح دس بر…

واہمہ ہے واہمہ ہے یہ سمندر شام ساحل کی طرح دس برس پہلے کی چاہت کی حقیقت کی طرح باغ میں اس کی رفاقت آسمانِ شب تلے گرمیوں میں ہاتھ اُس کا روشنی کا جال سا دو اندھیروں میں گھرے اک دائمی سے حال سا دو زمانوں کے اثر میں رنگِ ماہ و سال سا واہمہ…