ڈیلی آرکائیو

2020-05-26

'عید پر شعر لکھنے کی فرمائش کے جواب میں'…

'عید پر شعر لکھنے کی فرمائش کے جواب میں' ... یہ شالامار میں اک برگِ زرد کہتا تھا گیا وہ موسمِ گل جس کا رازدار ہوں میں نہ پائمال کریں مجھ کو زائرانِ چمن انہیں کی شاخِ نشیمن کی یادگار ہوں میں ذرا سے پتے نے بیتاب کردیا دل کو چمن…

::::" میکسیکو کے ادیب اور شاعر ھوزے ایمیلیو پ…

::::" میکسیکو کے ادیب اور شاعر ھوزے ایمیلیو پیچیک :میکسیکن معاشرت کی کھوکھلی تمثالیت سے بیزار ایک ادیب" ::: ***احمد سہیل *** میرے ہسپانوی زبان کے پسندیدہ ناول نگارھوزے ایمیلیو پیچیکو:(Jose Emilio Pacheco) ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تیس جون…

”حقیقت وحی“ علامہ اقبال عقل بے مایہ امامت کی سز…

”حقیقت وحی“ علامہ اقبال عقل بے مایہ امامت کی سزاوار نہیں راہبر ہو ظن و تخمیں تو زبوں کار حیات! فکر بے نور ترا، جذبِ عقل بے بنیاد! سخت مشکل ہے کہ روشن ہو شب تارِ حیات! خوب و ناخوب عمل کی ہو گرہ وا کیونکر گر حیات آپ نہ ہو شارحِ اسرارِ…

( غیـر مطبـوعـہ ) حقیقت بھی یہــــــاں خود کو زم…

( غیـر مطبـوعـہ ) حقیقت بھی یہــــــاں خود کو زمانہ ساز کہتی ہے مصوّر کی ہر اک تصــویر گہرے راز کہتی ہے زمیں اب کے حقائق کا وہ پردہ چاک کر دے گی یہاں خوابیدہ دستک بھی دریدہ ســــاز کہتی ہے یقین و بے یقینی کی وہی…

دھوکہ اور فریب کے اشعار …. جو ان معصوم آنکھوں …

دھوکہ اور فریب کے اشعار .... جو ان معصوم آنکھوں نے دیے تھے وہ دھوکے آج تک میں کھا رہا ہوں فراق گورکھپوری آدمی جان کے کھاتا ہے محبت میں فریب خود فریبی ہی محبت کا صلہ ہو جیسے اقبال عظیم اے مجھ کو فریب دینے والے میں تجھ پہ یقین کر چکا…

‎( غیـــر مطبــوعــہ ) ہر نفَس ہم نفَساں' ی…

‎( غیـــر مطبــوعــہ ) ہر نفَس ہم نفَساں' یاد بہت آتے ہیں ‎وہ مِرے دشمنِ جاں ' یاد بہت آتے ہیں ‎گرچہ مدّت ہوئی' مجھ سے وہ گلی چھوٹ گئی ‎وہ مکیں اور مکاں ' یاد بہت آتے ہیں ‎ چھوڑ آئے تھے جنھیں شوقِ سفر میں پیچھے ‎اے…

Sapiens: A Brief History of Humankind in Urdu & Hindi || Urdu Audiobook || Hindi Audiobook

Sapiens: A Brief History of Humankind یووال نوحا حراری کی بے مثال تصنیف اردو آڈیو بک کی شکل میں آج سے ہم اپنے سننے والوں کے لیے ایک بہت ہی اہم کتاب شروع کرنے جارہے ہیں، ایک ایسی کتاب جو دنیا کو زندگی کو اور انسان کو آپ جس طرح دیکھتے آئے…

صرف اتنے جرم پر ہنگامہ ہوتا جائے ہے تیرا دی…

صرف اتنے جرم پر ہنگامہ ہوتا جائے ہے تیرا دیوانہ تری گلیوں میں دیکھا جائے ہے آپ کس کس کو بھلا سولی چڑھاتے جائیں گے اب تو سارا شہر ہی منصور بنتا جائے ہے دلبروں کے بھیس میں پھرتے ہیں چوروں کے گروہ جاگتے رہیو کہ ان راتوں میں…