ڈیلی آرکائیو

2020-05-27

~ بونے خُدا ~ یہ بونے خُدا بدعُائیں تھوکے جاتے ہ…

~ بونے خُدا ~ یہ بونے خُدا بدعُائیں تھوکے جاتے ہیں آنکھوں میں ان کی آگ کی مانند سُلگتی نفرت جلتی رہتی ہے اور ان کے ہاتھ ہمیشہ بے گناہوں کے لہو سے داغدار رہے ہیں تاریک و متروک گلیوں میں یہ پھرتے ملیں گے دوسروں کی زندگی میں یہ جو…

( غیــر مطبــوعــہ ) نواح ِجاں میں ایک شب وہ عجب…

( غیــر مطبــوعــہ ) نواح ِجاں میں ایک شب وہ عجب خواب کی ساعت تھی عجب رنگ کی رات چاند نے جب سخن آغاز کِیا تھا ہم سے تیری مانوس سی خوش بُو سے ہوا تھی لب ریز لمسِ اوّل کی سنہری تحریر تیرے اور میرے سبک ماتھے پر جب بشارت کی طرح لکّھی گئی اک…

دنیا کا خوش ترین انسان جنگ ختم ہوگئی لیکن جنگ کے …

دنیا کا خوش ترین انسان جنگ ختم ہوگئی لیکن جنگ کے اثرات ابھی باقی تھے‘ فرانس کے ہر شہری نے جنگ میں زخم کھائے تھے‘ لوگ بے روزگار ہوئے‘ عمارتیں ڈھے گئیں‘ لاشیں بھی گریں اور ہزاروں لاکھوں لوگ اپنے جسمانی اعضاء سے بھی محروم ہوئے‘ پورا فرانس…

( قوافی کے تبدّل سے دو غزلیں ۔۔ غیــر مطبـوعـہ ) …

( قوافی کے تبدّل سے دو غزلیں ۔۔ غیــر مطبـوعـہ ) نفس نفس ہے ہدف ، کُلُّ مَنْ عَلَیہَا فَانْ ا جل ہے تیغ بہ کف ، کُلُّ مَنْ عَلَیہَا فَانْ اُبل پڑا ہے سمندر فنا کی گرمی سے تڑپ رہے ہیں صدف ، کُلُّ مَنْ عَلَیہَا فَانْ ذرا سی دیر میں بس…

بینک کی ملازمت میں پہلے پہل جس افسر کی ماتحتی میں …

بینک کی ملازمت میں پہلے پہل جس افسر کی ماتحتی میں کام شروع کیا وہ لطیفی صاحب تھے جو نہایت ملنسار، خوش خُلق اور باتدبیر تھے۔ اُن کی اہلیت اُن کے حوصلوں کے ساتھ قدم ملا کر نہیں چل سکتی تھی۔ سیدھی سڑک سے اُنہیں سخت الجھن ہوتی تھی، ہمہ وقت…

اسی دوران مجھے میلان کندیرا کا ایک اور ناول "…

اسی دوران مجھے میلان کندیرا کا ایک اور ناول " لائف از ایلس وہئیر " یا ’’ زندگی کہیں اور ہے ‘‘ پڑھنے کا اتفاق ہوا، میں اقرار کر چکا ہوں کہ مجھے کُندیرا کے مشہور زمانہ ناول کبھی پسند نہ آئے اور پھر جب ’’ امار ٹیلٹی ‘‘ میری نظر…

تہذیبِ مغرب کا عظیم انہدام: نومی اوریسکس -اور- ایرک کونوے

ترجمہ: ناصرفاروق(نومی اوریسکس سائنس کی تاریخ داں ہیں، سن 2013میں ہارورڈ یونیورسٹی امریکامیں پروفیسرتھیں، یونیورسٹی آف کیلیفورنیا میں تاریخ اور سائنس پڑھاتی رہی ہیں۔ انھوں نے جیو فزکس، ماحولیات، اور عالمی حدت کے موضوعات پرتحقیقی کام کیا…

رقصِ شب تاب رات ہنس دیتی ہے با دیدۂ پُرنم ساقی ب…

رقصِ شب تاب رات ہنس دیتی ہے با دیدۂ پُرنم ساقی بتّیاں خونِ رگِ تاک کی جب جلتی ہیں جگمگا اُٹھتی ہے تاریکئ عالم ساقی جب پیالوں میں چراغوں کی لویں ڈھلتی ہیں پھول گرتے ہیں سرِ فرش برابر ساقی ساز کی آنچ پہ رقصندہ شراروں کا گماں گرمئ رقص سے…

"دو جنرل اور ایک عام آدمی"، میخائیل سلتی…

"دو جنرل اور ایک عام آدمی"، میخائیل سلتی کوف شیدرن انیسویں صدی کے روسی ادیب میخائیل سلتی کوف شیدرن کی تحریر جسے 1962 میں ظ۔ انصاری نے اردو میں ڈھالا۔ کہتے ہیں کسی زمانے میں دو جنرل تھے۔ دونوں تھے بڑے من موجی۔ دونوں جنرلوں نے…

کورونا : سوال تو اٹھ رہے ہیں۔۔آصف محمود

’ سازشی تھیوری‘‘ یقیناً ایک نا معقول سی چیز ہے اور ہمارے ہاں محققین کرام نے جس طرح ہر کونے کھدرے سے دو تین درجن یہودی سازشیں کسی بھی وقت برآمد کر کے سامنے رکھ دینے کی فکری مشق فرمائی ہے اس کے بعد سچ تو…