ڈیلی آرکائیو

2020-05-29

افسانہ : ایندھن۔۔!! مصنف : خلیل جبران۔۔!! ••••••…

افسانہ : ایندھن۔۔!! مصنف : خلیل جبران۔۔!! •••••• ایک طوفانی شام جبکہ ایک عیسائی پادری اپنے گرجے میں تھا ایک غیر عیسائی عورت آئی اور اس کے حضور میں کھڑی ہوکر بولی۔۔۔ " مقدس راہب میں عیسائی نہیں ہوں۔۔ لیکن کیا میرے لئے بھی دوزخ کی آگ…

( غیــر مطبــوعــہ ) مری چاہتیں بھی تو خام تھیں&#…

( غیــر مطبــوعــہ ) مری چاہتیں بھی تو خام تھیں' ترے عشــق کو بھی زوال تھا نہ ہی تجھ کو تھیں مِری چاہتیں' نہ ہی تجھ کو میرا خیال تھا لئے دل میں کتنی کدورتیں ' یہ جو عمــــــر ساتھ گزار دی تری صلح جوئی بھی ہے سبب مرے ضبط کا…

( غیــر مطبــوعــہ ) یہ چمن ہے اور ہی کچھ،رنگ و ب…

( غیــر مطبــوعــہ ) یہ چمن ہے اور ہی کچھ،رنگ و بو کچھ اور ہے خامشـــی کی بات کیا، وہ خوش گلو کچھ اور ہے دریا دریا بہــہ رہی ہے خـــامشـــی کے ساتھ اور یہ جـــــو اڑتی ریت ہے، یہ آب جو کچھ اور ہے تشـنگی کـو تشـنگی سے زیر کــرنا ہے مجھــے…

( غیــر مطبـوعـہ ) بہت پیاســــــــــا ہے پیــڑ ا…

( غیــر مطبـوعـہ ) بہت پیاســــــــــا ہے پیــڑ اور پا برہنہ چل رہا ہے سفـــــر کیا ختم ہو، ہم راہ صحــــــــرا چل رہا ہے! کــوئی نا دیــدہ کشـــــتی رینگتی رہتی ہے دل میں یہ مجھ سُوکھے کنویں میں کیسا دریا چل رہا ہے؟ اب اِس انبـــــــــوہ…

ہم معصوم ہیں! ہم بچے ہیں۔۔محمد اظہار الحق

ولیم اور بیگم ولیم ایک اپارٹمنٹ میں رہتے ہیں۔ کورونا کی وبا نازل ہوئی تو وہ اپنی رہائش گاہ تک محدود ہو گئے۔کچھ ہی دن بعد ان کے ہاں بیٹی کی ولادت ہوئی۔ مسز ولیم بے تاب تھی کہ اپنے والدین کو نئی نویلی بیٹی…

نہیں معلوم کیوں آخر دمِ دیدار رقصاں ہوںمگر ہے ناز…

نہیں معلوم کیوں آخر دمِ دیدار رقصاں ہوںمگر ہے ناز ہر صورت بہ پیشِ یار رقصاں ہوںتو ہو نغمہ سرا ہر دم میں ہر اک بار رقصاں ہوں تری خاطر میں ہر اک طرز پر اے یار رقصاں ہوںتو وہ قاتل کہ جو بہر تماشا خون کرتا ہےمیں وہ بسمل کہ زیرِ خنجرِ خوں…

ارطغرل غازی۔نیا بیانیہ | Khabrain Group Pakistan

سجادوریاوزیر اعظم پاکستان عمران خان کی خصوصی دلچسپی کے باعث ترکی ڈرامہ ارطغرل غازی اُردو ڈبنگ کے ساتھ قومی تشریاتی ادارے پاکستان ٹےلیوژن پر قسط وار نشر کیا جا رہا ہے۔وزیر اعظم پاکستان کے وژن کو سراہتا ہوں ،انہوں نے بہت مثبت

( غیــر مطبــوعــہ ) کیا تم بھی چلے جاو گے، اچّھا…

( غیــر مطبــوعــہ ) کیا تم بھی چلے جاو گے، اچّھا ہے' مِرے دوست ! ہاں، میں بھی سمجھ جاؤں گا، دنیا ہے' مِرے دوست ! دُشنام کسی چھت سے، کسی سَمت سے پتّھر قیدی ہے مِرے مِتر تُو، کوفہ ہے ' مِرے دوست ! کیا تم پہ کبھی ابر سے…